ملٹری اکیڈمی سے پاس آئوٹ ہونیوالوں میں بلوچستان کے 54 کیڈٹس بھی شامل، پاکستان آرمی قومی یکجہتی کی عکاس ہے: جنرل قمر جاوید باجوہ

ملٹری اکیڈمی سے پاس آئوٹ ہونیوالوں میں بلوچستان کے 54 کیڈٹس بھی شامل، ...
ملٹری اکیڈمی سے پاس آئوٹ ہونیوالوں میں بلوچستان کے 54 کیڈٹس بھی شامل، پاکستان آرمی قومی یکجہتی کی عکاس ہے: جنرل قمر جاوید باجوہ

  

کاکول (ڈیلی پاکستان آن لائن)  پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول ایبٹ آباد میں گزشتہ روزپا سنگ آؤٹ پریڈ ہوئی  ،جس کا  آرمی چیف نے معائنہ کیا اور نمایاں کارکردگی دکھانے والے کیڈٹس کوایوا رڈز دیئے، کل پاس آئوٹ ہونیوالوں میں 54 کیڈٹس کا تعلق بلوچستان سے ہے جبکہ بلوچستان سے ہی دو سو کے قریب کیڈٹس  زیر تربیت ہیں۔ 

اس موقع پر آرمی چیف نے  پاکستان آرمی کو قومی یکجہتی کا عکاس قرار دیا جہاں تمام اکائیوں کی تناسبی نمائندگی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ   پاکستان آرمی ہماری قابلِ فخر قوم کی خوبصورت اور حقیقی عکاس ہے، آپ چاہے آفیسر ہوں یاجوان،  والنٹیر انڈکشن سے لے کر، تمام اکائیوں کی تناسب سے نمائندگی تک،آپ میں مدرسہ طالب علم سے کر پبلک سکول تک،ایک عام آدمی کے بیٹے سے لے کر متوسط وامیر کے بیٹے تک اور سب سے بڑھ کر شہیدوں کے وارث دراصل پاکستان کی خوبصورت نمائندگی کر رہے ہیں۔ 

ملٹری ذرائع کے مطابق اس وقت  بلوچستان  میں    9 کیڈٹ کالجز،  Nust Campus کا قیام اور بالخصوص پنجگور میں ڈیٹس پراسسنگ پلانٹ  بلوچستان کی ترقی کے لیے اہم سنگِ میل ثابت ہو نگے۔ یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ  بلوچستان سے پاکستان آرمی میں 25ہزار سے زائد سولجرز،1200سے زائد آفیسرز خدمات سر انجام دے رہے ہیں، اس وقت بلوچستان سے 200کے قریب کیڈٹس پاکستان ملٹری اکیڈی میں زیرتربیت ہیں جبکہ  ملک بھر کے آرمی پبلک سکولوں میں بلوچستان سے تعلق رکھنے والے بچے تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ   چمالانگ ایجوکیشن سکیم کے تحت 6ہزارسے زائد طلباء اب تک مستفید ہو چکے ہیں جبکہ 4550طالب علم اس پراجیکٹ کے ذریعے زیورتعلیم سے آراستہ ہورہے ہیں۔ 

 پاسنگ آؤٹ تقریب سے خطاب میں آرمی چیف کامزید کہنا تھا اب وقت ہے متحد ہوکر تمام صلاحیتیں بروئے کارلاکرپاکستان کو ترقی کی راہ پر گامزن کریں۔ قائداعظم ؒ کے ویژن کے مطابق پاکستان نے علاقائی اور عالمی امن کیلئے بھرپور کوششیں کی، یہ سفر بہت مشکل تھا، لیکن اطمینان یہ ہے آج ہمارے ادارے مضبوط ہو رہے ہیں۔ ہماری تباہی کے منصوبے بنانیوالے دشمن مایوسی سے ہماری کامیابیوں کو دیکھ رہے ہیں۔ آپ پر فرض ہے مکمل وفاداری اور بے مثال لگن سے اْن کے اعتماد پر ہمیشہ پْورا اْتریں۔ قوم کا افواج پر اعتماد اور رشتہ شہیدوں اور غازیوں کی بے شمار قربانیوں کا ثمر ہے۔ آپ پر لازم ہے اس رشتے کو مضبوط سے مضبوط تر بناتے جائیں۔ نظم و ضبط، فرائض کی بجاآوری اور غیر جانبداری آپ کا ہدف ہونا چاہیے۔نوجوان کیڈٹس کو مخاطب کرتے ہوئے آرمی چیف کا کہنا تھا آپ کو اپنی جوانی کا بڑاحصّہ سخت مشکلا ت،بہترملکی مستقبل کی آبیاری میں مختص کرنا پڑیگا۔ اسے مشکل کی بجائے چیلنج کے طور پر قبول کریں۔ سپاہ گری مشکل راستہ ہے،جس پر چلنا آسان نہیں۔ اِس راستے میں اپنے آپ کو وقف اور ڈلیور کرنا پڑتا ہے۔

ان کاکہناتھاکہ یاد رکھیں اِس عظیم قوم اور پاک فوج کی تمام سابقہ اور آنے والے نشیب وفراز کی ذمہ داری آپ پر ہے، اِن میں بہت سے اْتار چڑھاؤ کے واقعات آپ کی پیدائش سے بھی پہلے کے ہوں گے، اپنی ذمہ داریاں مکمل کرنے کے بعدبھی آپکوملکی سلامتی،سیکورٹی کیلئے جوابدہ ٹھہرایاجائے گا، یہ آپ کے کندھوں پرپاکستان کی عظیم قوم کا آپ سے محبت اور ذمہ داری کا ایک منفرد انداز ہے، پاکستا ن میں کوئی بھی کسی اور کے کئے کیلئے جوابدہ نہیں۔جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا تھا قوم نے ہمیشہ چیلنجز کو کامیابیوں میں تبدیل کیا، اور انشا اللہ آئندہ بھی کریں گے،  فروری 2019 اپنے سے پانچ گنا بڑے دشمن کو شکست دی، پاک فوج قابل فخر قوم کی خوبصورت اورحقیقی عکا س ہے، پاکستانی قوم ہرمشکل اورہرچیلنج میں آپ کوشانہ بشانہ ملے گی۔ ہم نے امن کیلئے بھاری قیمت ادا کی ہے۔ امن قائم رکھنے کیلئے لہوسے ملک کی حفاظت یقینی بنائیں گے۔جہاں تعمیری اصلاح کی ضرورت ہو، اْس کا ضرور جائزہ لیں۔ یہ تنقید دراصل اس بات کا ثبوت ہے کہ بحیثیت قوم ہمیں حالات کا ادراک ہے۔آرمی چیف کا کہنا تھا عوام، دستور، دستوری روایات، وطن سے عہدوفا ہماری اصل مضبوطی اورطاقت ہے۔ آئین پاکستان اور قومی مفادات تمام معاملات میں ہمارے رہنما ہیں۔ دفاعی حوالے سے ایک مضبوط پاکستان ہے۔

انہوں نے کہا کہ ذات پات، مذہب اور لسانیت سے برتر ہم سب پاکستان کے سپاہی ہیں، اتحاد ہماری قوت اور ان شااللہ ہم سب متحد ہیں، ہائبرڈ وارکا مقصد اِس مفروضے کو تقویت دیناہے یہاں کچھ بھی اچھا نہیں ہوسکتا، میں آپ کو یقین دلاتا ہوں یہاں سب کچھ اچھا ہو گا۔ دْشمن اپنے عزائم میں ناکام ہونے کے بعد دل شکستہ ہیں، مایوسی کے شکار دشمن کی طرف سے پاکستان کو ہائبرڈ وارکا سامنا ہے، ہائبرڈ وار کا ہدف عوام ہیں اور میدانِ جنگ انسانی ذہن ہیں، ہر سطح پر قومی قیادت ہائبرڈ وار کا ہدف ہے، آپ کو بحیثیت ینگ لیڈرز پہلے دِن سے اِس چیلنج کا سامنا کرنا پڑے گا، آپ کو اس ماحول میں اْمید کی کِرن بن کر اپنے جوانوں کو اِس پروپیگنڈے سے محفوظ رکھنا ہوگا، اْصولوں اور روایات پرعمل پیرا ہو کر ہی آپ اِس ہائبرڈ وار کا مقابلہ کر سکتے ہیں۔ تمام کامیابیوں اورچیلنجزکے باوجود وطن اورقوم کوبہترین نتائج کیلئے اپنا آپ پیش کردیا، پاکستان ایک ترقی پذیرملک ہے لیکن پاکستانیوں کے دِل بہت بڑے ہیں، قوم ہرمشکل اور ہرچیلنج میں آپ کواپنے شانہ بشانہ ملے گی۔

مزید :

قومی -