لے کے قاصد خبر نہیں آتا| قمر جلالوی |

لے کے قاصد خبر نہیں آتا| قمر جلالوی |
لے کے قاصد خبر نہیں آتا| قمر جلالوی |

  

لے کے قاصد خبر نہیں آتا

جانے کیوں لوٹ کر نہیں آتا

دل کسی اور پر نہیں آتا

تم سے اچھا نظر نہیں آتا

شکوۂ بے وفائی گل کیا

باغباں تک نظر نہیں آتا

اُف یہ تاریکیِ شبِ فرقت

کوئی اپنا نظر نہیں آتا

شب کو میں ان کے گھر گیا تو کہا

دن کو تو اے قمر نہیں آتا

نامہ بر ان کا میں غلام نہیں

جا کے کہہ دے قمر نہیں آتا

شاعر: قمر جلالوی

(مجموعۂ کلام:رشکِ قمر؛سالِ اشاعت،1977 )

Lay   K    Qaasid   Khabar    Nahen   Aata

Jaanay    Kiun   Laot   Kar    Nahen   Aata

Dil   Kisi   Aor   Par    Nahen   Aata

Tum   Say   Achha   Nazar    Nahen   Aata

Shikwa-e-Be   Wafaai-e-Gull   Kaya

Baaghbaan   Tak   Nazar    Nahen   Aata

Uff   Yeh   Tareeki-e-Shab-e-Furqat

Koi   Apna   Nazar    Nahen   Aata

Shab   Ko   Main   Un   K   Ghar   Gaya   To   Kaha

Dn   Ko   Tu   Ay   QMAR   Nahen   Aata

Naama   Bar   Un   Ka   Main   Ghulaam   Nahen

Jaa   K   Keh   Day   QAMAR     Nahen     Aata

Poet: Qamar   Jalaalvi

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -