عالمی اقتصادی فورم:راجہ چین میں چیمپیئن بن پائیں گے؟

عالمی اقتصادی فورم:راجہ چین میں چیمپیئن بن پائیں گے؟
عالمی اقتصادی فورم:راجہ چین میں چیمپیئن بن پائیں گے؟

  

              چین کی حیرت انگیز ترقی پچھلی تین دہائیوں سے جاری معاشی پالیسیوں کا نتیجہ ہے۔ کروڑوں افراد خط غربت کو خیرباد کہہ چکے ہیں اور کروڑوں ہی غربت کی زنجیروں سے آزاد ہونے کو تیار بیٹھے ہیں۔ ترقیاتی کام ہیں کہ رکنے کا نام ہی نہیں لیتے۔ اس تیزی سے شہر اپنی جون بدل رہے ہیں کہ پاکستانی سفارتکاروں کے بقول جی پی ایس (GPS) بھی کئی بار راستہ بنانے میں ناکام ہو جاتا ہے۔

تیان جن ہی کو لے لیجئے کہ جہاں ورلڈ اکنامک href="https://dailypakistan.com.pk/tag/ فورم"> فورم کا انعقاد ہو رہا ہے اور دنیا بھر کے سرکردہ کاروباری افراد جہاں سینکڑوں کی تعداد میں جمع ہیں۔ صرف اس شہر کی معیشت کا حجم اس وقت 180 ارب ڈالر کے لگ بھگ ہے جو پاکستانی معیشت کے کل حجم سے زیادہ ہے۔ کسی زمانے میں چند سو ڈالر فی کس کی آمدنی والا یہ شہر، اس وقت نو ہزار ڈالر فی کس آمدنی پیدا کر رہا ہے۔ جس طرف نظر دوڑائیں چوڑی کشادہ سڑکیں ہیں اور ان پر پل ہیں،جن کے اوپر پھر کئی پل ہیں۔ تیان جن کے لفظی معنی ”شہنشاہ کی سواری کی گزر گاہ“ ہیں۔ اس وقت یہ شہر اپنے نام کی تعبیر کے طور پر سامنے آ رہا ہے۔ چین میں پانچ شہر ایسے ہیں جو کسی صوبے کا حصہ نہیں اور وہ وفاقی حکومت کی عملداری میں سمجھے جاتے ہیں۔ تیان جن بھی ان میں سے ایک ہے اور چین کی گہرے پانی کی سب سے بڑی بندر گاہ ہے، ”ورلڈ اکنامک href="https://dailypakistan.com.pk/tag/ فورم"> فورم‘ ‘ کی مختلف میٹنگز کے لئے یہ ایک مستقل جگہ بن چکی ہے جو کانفرنس یہاں منعقد ہو رہی ہے اس کا بنیادی نکتہ یہ ہے کہ آج کے دور میں سائنس اور ٹیکنالوجی کسی بھی معیشت کی ترقی کا سب سے ضروری ایندھن ہیں۔ جو قومیں ان علوم میں کمال حاصل کریں گی ان کا اقبال دنیا میں بلند ہو گا۔ چین یہی سبق اپنے دیرینہ دوست پاکستان کو بھی دے رہا ہے۔ کمیونسٹ پارٹی کے آئین میں 2007ءمیں ترمیم کرکے سائنسی ترقی سے عبارت اور معاشی تفاوت سے پاک معاشرہ قائم کرنے کو نصب العین قرار دے دیا گیا ہے۔

اس حوالے سے منعقد ہونے والی ورلڈ اکنامک href="https://dailypakistan.com.pk/tag/ فورم"> فورم کی اس کانفرنس کو ”نئے چیمپیئنز کا سالانہ اجلاس“ کا نام دیا گیا ہے۔ دنیا میں تیزی سے ترقی کرنے والے ممالک اور کاروباری ادارے جو سائنس اور ٹیکنالوجی کو بروئے کار لا کر ترقی کی راہ پر گامزن ہیں، سر جوڑ کر بیٹھیں گے اور ترقی کے نئے راستے تلاش کریں گے۔ پاکستان میں بھی اتفاق سے ایک نئے وزیراعظم مسندِ اقتدار پر فائز ہوئے ہیں لیکن کیا وہ ورلڈ اکنامک href="https://dailypakistan.com.pk/tag/ فورم"> فورم کی اصطلاح میں ”پاکستان کے نئے چیمپیئن“ بن سکتے ہیں؟ امکانات مبہم ہیں لیکن معدوم نہیں۔۔۔

مزید :

تجزیہ -