جیا موسی سکینڈل ، ڈی سی او کا سخت نوٹس ، پٹواری سے رپورٹ طلب

جیا موسی سکینڈل ، ڈی سی او کا سخت نوٹس ، پٹواری سے رپورٹ طلب

  

لاہور(اپنے نمائندے سے)جیا موسی سکینڈل ،ڈی سی لاہور نے رپورٹ طلب کر لی،اسسٹنٹ کمشنر سٹی انکوائری افسر مقرر،پٹواری حلقہ کو ریکارڈ سمیت طلب کر لیا گیا ،الزام ثابت ہونے کی صورت میں پیڈا ایکٹ کے تحت کاروائی عمل میں لائی جائے گی ،اسسٹنٹ کمشنر سٹی کا موقف،تفصیلات کے مطابق روزنامہ پاکستان کی خبر پر ایکشن ،ڈی سی لاہور کیپٹن ریٹائرڈ محمد عثمان نے جیا موسیٰ میں تعینات پٹواری حلقہ مقبول احمد سندھوسے ریکارڈ میں کی جانے والی بے ضابطگیوں کا نوٹس لے لیا ڈی سی او کے قریبی رشتے داروں کا نام استعمال کرتے ہوئے اندراج کروائے جانے والے انتقالات کی چھان بین کا بھی حکم دے دیا ہے ،مزید معلو م ہوا ہے کہ محکمہ ریونیو کی تحصیل سٹی کے پٹوار سرکل جیاموسیٰ میں تعینات حلقہ پٹواری مقبول احمد سندھو نے رقبہ تعدادی 2کنال 7مرلہ کے 12ایسے انتقالات کا اندراج کر دیا ہے جو کہ پٹوار ریکارڈ سے ہر کز مطابقت نہ رکھتے ہیں، ان انتقالات پر ثبت دستخط بھی جعلی ہیں مزید جبکہ اس جعلسازی اور ملی بھگت کے دوسرے نمبر پر حصہ دار قانونگو نے بھی ان انتقالات پر 100فیصد پڑتال تحریر کر دی ہے تاہم 1کروڑ سے زائد رشوت وصولی اور ریکارڈ میں ردو بدل کئے جانے کی اطلاعات کے بعد اس جعلسازی کے چرچے عام ہو گئے ہیں جس پر ریونیو افسر نے جب مذکورہ انتقالات کی پڑتال کی تو ریکارڈکے مطابق درست نہ پائے جانے والے پر ان انتقالات کو خارج کر دیا تھا اور مذکورہ پٹواری کو وارننگ دی کہ ایسے انتقالات کا اندراج آئندہ نہ کرے تاہم لینڈ مافیا اور پٹوار ی حلقہ مقبول احمد سندھو 27جنوری 2015کو خارج کئے جانے والے انتقال نمبران18325,18326,18327,18339,18330,18331,18332 18333,18338،18182,18251 بعد ازاں 6ماہ کے وقفے کے بعد موجودہ ڈی سی او لاہور کیپٹن محمد عثمان کا حوالہ دے کر دوبارہ 27-03-2015کی تاریخ میں 12سے زائد انتقالات کا اندراج کر دیا ہے جن کے انتقالات نمبران 18595سے لے کر 18607تک تحریر کر دیئے گئے ہیں اور اس ضمن میں ریونیو آفیسر سردار جمیل کے اوپر بھی دباؤ ڈالا ، جبکہ روزنامہ پاکستان کی جانب سے اس جعلسازی کا پردہ فاش ہونے کے بعد ڈی سی او لاہور نے اسسٹنٹ کمشنر سٹی عاصم سلیم کو اس کیس کی انکوائری کا حکم دیا ہے جس کے بعد اسسٹنٹ کمشنر سٹی نے پٹواری حلقہ جیا موسیٰ مقبول احمد سندھو کو ریونیو ریکار ڈ سمیت طلب کر لیا ہے اور ریکارڈ کی چھان بین شروع کر دی ہے اے سی سٹی عاصم سلیم کا کہنا ہے کہ الزم ثابت ہونے کی صورت میں مذکورہ اہلکار کے خلاف پیڈا ایکٹ کے تحت کاروائی عمل میں لائی جائے گی ،دوسری جانب ریونیو افسر شاہدرہ سردار جمیل کا کہنا ہے کہ رجسٹریوں کی پاسنگ کے دوران جو فردیں استعمال کی گئی ہیں ان پر میرے دستخط جعلی کئے گئے ہیں ،تاہم مذکورہ پٹواری کا کہنا ہے کہ انکوائری کے دوران اپنی بے گناہی ثابت کرنے کی کوشش کروں گا ،الزامات بے بنیاد ہیں جن میں کوئی صداقت نہ ہے ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -