قاسم ضیا کی درخواست ضمانت پرنیب سے تفصیلی ریکارڈ طلب کر لیا گیا

قاسم ضیا کی درخواست ضمانت پرنیب سے تفصیلی ریکارڈ طلب کر لیا گیا

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے پیپلز پارٹی پنجاب کے سابق صدر قاسم ضیا کی درخواست ضمانت پرنیب سے تفصیلی ریکارڈ طلب کر لیاہے، عدالت نے نیب کے وکیل کو ہدایت کی ہے کہ 17ستمبر کو بحث مکمل کی جائے،مسٹر جسٹس محمود مقبول باجوہ کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے قاسم ضیا کی درخواست ضمانت پر سماعت کی، ملزم کے وکیل بیرسٹر علی ظفر نے موقف اختیار کیا کہ نیب کے پاس علی سکیورٹی ایکسچینج سکینڈل 7برسوں سے زیر التوا ہے مگر نیب نے اس کیس میں تفتیش مکمل نہیں کی، قاسم ضیا کا اس معاملے سے کوئی تعلق ہی نہیں ہے، قانون کے مطابق اگر کوئی معاملہ انکوائری کی سطح پر ہو تو ملزم کو ضمانت دی جا سکتی ہے، ایڈیشنل ڈپٹی پراسیکیوٹر نیب عارف محمود رانا نے بنچ کو بتایا کہ8 کروڑ کے اس سکینڈل میں مرکزی ملزم علی عثمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے، علی عثمان نے بیان دیا ہے کہ قاسم ضیا سمیت تمام ملزموں نے مل کر فراڈ کیا ہے، حتی کہ قاسم ضیا اپنے انتخابات کے لئے بھی اسی کمپنی سے رقم استعمال کرتے رہے ہیں، قاسم ضیا نے اپنے ذمہ واجب الاد رقم کی رضاکارانہ ادائیگی کیلئے درخواست دیدی ہے ،درخواست ضمانت مسترد کی جائے، فاضل بنچ عبوری سماعت کے بعد نیب کو ہدایت کی کہ اس کیس کا تفصیلی ریکارڈ آئندہ تاریخ سماعت پر پیش کیا جائے ۔

مزید :

صفحہ آخر -