وہ عرب ملک جس میں غیر ملکیوں کی کفیلوں سے جان چھوٹنے والی ہے

وہ عرب ملک جس میں غیر ملکیوں کی کفیلوں سے جان چھوٹنے والی ہے
وہ عرب ملک جس میں غیر ملکیوں کی کفیلوں سے جان چھوٹنے والی ہے

  

دوحہ (نیوز ڈیسک) عرب ممالک میں کام کرنے والے غیر ملکی مدتوں سے یہ خواب دیکھ رہے ہیں کہ کفیل سسٹم سے انہیں نجات ملے، اور اب اس ضمن میں امید کی پہلی کرن قطر سے پھوٹتی نظر آرہی ہے جہاں کابینہ نے اس نظام کو تبدیل کرنے پر رضامندی ظاہر کردی ہے۔

خبر رساں ایجنسی اے ایف پی نے قطر کی سرکاری نیوز ایجنسی QNA کے حوالے سے بتایا ہے کہ قطری کابینہ نے کفیل سسٹم کے خاتمے اور اس کی جگہ نئے قوانین متعارف کروانے کا عندیہ دیا ہے، جن کے تحت غیر ملکیوں کے ملک میں داخلے، خروج اور قیام کے معاملات کا انصرام کیا جائے گا۔ نئے قانون کے مسودے میں داخلہ، خروج اور قیام کے علاوہ ملازمین کی بھرتی اور آجر کی تبدیلی سے متعلق شقیں بھی شامل ہیں۔ مسودے کی وزراءکی طرف سے فائنل منظوری ابھی باقی ہے۔

قطر میں ایک اندازے کے مطابق تقریباً 17لاکھ غیر ملکی کام کررہے ہیں اور ان میں سے اکثر ورلڈ کپ فٹ بال 2022ءسے متعلقہ تعمیراتی منصوبوں پر کام کررہے ہیں۔ قطر کو اس اہم ٹورنامنٹ کی میزبانی ملنے کے بعد عالمی سطح پر مطالبہ کیا جارہا تھا کہ ملازمین کی بہبود کیلئے قوانین میں اہم تبدیلیاں کی جائیں اور کفیل سسٹم ختم کیا جائے۔ کچھ عرصہ قبل قطری حکومت نے اس حوالے سے وعدہ بھی کیا تھا لیکن پھر خبریں آرہی تھیں جیسے یہ وعدہ وفا نہ ہوسکے گا۔ لیکن حالیہ پیشرفت کے بعد امکانات پھر سے روشن ہوئے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -