بغاوت کیس، عدالت میں پیش نہ ہونے پر شاہد خاقان کے وارنٹ جاری

بغاوت کیس، عدالت میں پیش نہ ہونے پر شاہد خاقان کے وارنٹ جاری

لاہور (نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے سابق وزرا ئے اعظم کے خلاف بغاوت کی کارروائی کے لئے دائر کیس میں عدالتی حکم کے باوجود پیش نہ ہونے پرسابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے ہیں جبکہ سابق وزیراعظم میاں محمدنواز شریف کو سپرنٹنڈنٹ اڈیالہ جیل کی وساطت سے نوٹس جاری کئے گئے ہیں۔جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی ،جسٹس عاطر محمود اور جسٹس چودھری محمدمسعود جہانگیرپر مشتمل فل بنچ نے ایس ایس پی اسلام آباد کو صحافی سرل المیڈا سے عدالتی نوٹس کی تعمیل کروانے کا حکم دیا ہے ۔عدالت نے تینوں کو 23ستمبر کے لئے نوٹس جاری کئے ہیں۔درخواست گزار شہری کی طرف سے اس کیس میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ سابق وزیراعظم میاں محمدنواز شریف نے انگریزی اخبار کو دیئے گئے انٹرویو میں غیر ذمہ دارانہ اور اداروں کے خلاف باتیں کیں،جس پر سیکیورٹی کونسل کا اجلاس بلایا گیا اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے بند کمرے کی کارروائی کی تفصیلات میاں نواز شریف کو آگاہ کردیا۔اس طرح انہوں نے اپنے حلفی کی خلاف ورزی کی ہے ،درخواست گزار کے وکیل نے استدعا کی کہ میاں نواز شریف اورشاہد خاقان عباسی کے خلاف بغاوت کے الزام میں کارروائی کی جائے، درخواست میں میاں نواز شریف کا انٹرویو کرنے والے صحافی سرل المیڈاکے خلاف کارروائی کی استدعا بھی کی گئی ہے ۔گزشتہ روز بنچ کے سربراہ جسٹس مظاہرہ علی اکبر نقوی نے استفسار کیا کہ شاہد خاقان عباسی پیش کیوں نہیں ہوئے؟ فل بنچ نے سابق وزیر اعظم کے پیش نہ ہونے پر ان کے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے جبکہ میاں نواز شریف کو جیل سپرنٹنڈنٹ اور سرل المیڈا کو ایس ایس پی اسلام آباد کی وساطت سے نوٹس جاری کئے گئے ہیں۔

شاہد خاقان؍وارنٹ

مزید : علاقائی