العزیزیہ ریفرنس ، نواز شریف کے وکیل کی واجد ضیاء پر جرح جاری ، سماعت آج پھر ہو گی

العزیزیہ ریفرنس ، نواز شریف کے وکیل کی واجد ضیاء پر جرح جاری ، سماعت آج پھر ہو ...

اسلام آباد(این این آئی)مسلم لیگ(ن)کے تاحیات قائد نواز شریف کے خلاف العزیزیہ سٹیل ملز ریفرنس کی سماعت احتساب عدالت میں دوبارہ ہوئی جس دوران نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث کی پاناما جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیاء پر جرح جاری رہی۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ روزاحتساب عدالت نمبر 2 کے جج محمد ارشد ملک نے نیب ریفرنس پر سماعت کی۔ خواجہ حارث نے واجد ضیاء سے جرح کرتے ہوئے سوال کیا کہ کیا جے آئی ٹی کے پاس وہ دستاویزات ہیں جس میں ہل میٹل کو کمپنی ظاہر کیا گیا ہو؟واجد ضیاء نے جواب دیا کہ جے آئی ٹی کے پاس موجود ایک سورس دستاویز میں ایچ ایم ای کو کمپنی لکھا گیا ہے اور یہ سورس دستاویز ایم ایل اے لکھے جانے کے بعد 20 جون 2017 کو موصول ہوئی تھی۔انہوں نے بتایا کہ ایم ایل اے میں 2004-5 کو ہل میٹل اسٹیبلشمنٹ کے ان کارپوریشن کا سال لکھا اور ایم ایل اے لکھے جانے کے وقت کسی گواہ نے ان کارپوریشن کا سال نہیں بتایا تھا۔اس کے ساتھ ہی احتساب عدالت نے العزیزیہ سٹیل ملز ریفرنس کی سماعت آج ساڑھے بارہ بجے تک ملتوی کردی، خواجہ حارث واجد ضیاء پر جرح جاری رکھیں گے۔العزیزیہ سٹیل ملز ریفرنس کی سماعت کے دوران جج ارشد ملک جوڈیشل کمپلیکس کی حالت زار کے معاملے پر بول پڑے اور کہا کہ سی ڈی اے اور بلڈنگ ڈیپارٹمنٹ اس عمارت کی ذمہ داری لینے کو تیار نہیں۔معزز جج نے کہا کہ یہ عمارت باقاعدہ طور پر ٹھیکے دار کی طرف سے سپرد نہیں ہوئی، چیف صاحب کو خط لکھ کر توجہ دلائی گئی لیکن تاحال کوئی پیش رفت نہیں۔

مزید : صفحہ آخر