کوہاٹ میں سیکرٹری بلدیات کی ہدایات پر عمل درآمد نہ ہو سکا

کوہاٹ میں سیکرٹری بلدیات کی ہدایات پر عمل درآمد نہ ہو سکا

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) سیکرٹری بلدیات کی ہدایات پر عمل درآمد نہ ہو سکا تحصیل پلازہ کے باہر قائم دو دکانوں کو مسمار نہ کیا جا سکا سال بھر سے زیادہ عرصہ گزرنے کے باوجود پلازے میں ٹرانس فارمر بھی نہ لگ سکا دکانوں کی الاٹمنٹ کے باوجود ٹی ایم اے کو کرائے کی مد میں کوئی وصولی نہ ہو سکی تفصیلات کے مطابق سیکرٹری بلدیات سید جمال الدین شاہ نے ٹی ایم اے کوھاٹ کے کرپشن زدہ معاملات کی دیکھ بھال کے لیے دو رکنی انکوائری کمیٹی بنانے کے ساتھ ساتھ تحصیل پلازہ کے باہر دو دکانوں کو مسمار کر کے راستے کو کشادہ کرنے کے ساتھ ساتھ بازاروں میں سے ریڑھے ختم کرنے کی ہدایات جاری کی تھیں مگر افسوس ٹی ایم اے کوھاٹ کے افسران نے سیکرٹری کی ہدایات کو جوتے کی نوک پر رکھ دیا دوسری جانب تحصیل پلازے میں دکانوں کی الاٹمنٹ کے باوجود سال بھر گزرنے کے بعد بھی ادارے کو کرایہ شروع نہ ہو سکا کیوں کہ تاجروں کا کہنا ہے جب تک بجلی کی فراہمی نہیں ہو گی وہ کرایہ نہیں دیں گے جس سے ٹی ایم اے کوھاٹ کو سالانہ لاکھوں روپے کا نقصان ہو رہا ہے کیوں کہ ٹی ایم اے انتظامیہ پلازے میں ایک سال میں ٹرانس فارمر نہ لگوا سکی واضح رہے ٹی ایم اے افسران کی نااہلی کی وجہ سے سرکاری سبزی منڈی‘ کوتل پلازہ‘ جناح پلازہ سمیت اب تحصیل پلازہ کے معاملات بھی تباہی کی جانب گامزن ہیں شہریوں نے وزیر اعلیٰ کے مشیر ضیاء اللہ بنگش سے درخواست کی ہے کہ ٹی ایم اے کوھاٹ میں سینئر کلرک سے ٹی ایم او لیول تک سٹاف میں آپریشن کرتے ہوئے موجودہ سٹاف کو تبدیل کر کے ان کی جگہ نوجوان پڑھے لکھے اور کام کو سمجھنے والے ایماندار سٹاف کی باہر سے تعیناتی کرے تاکہ تباہ حال ٹی ایم اے کوھاٹ اپنے پاؤں پر کھڑی ہو سکے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر