فزیو تھراپی کے شعبے کو بہتر بنانے کیلئے حکومت معاونت کرے گی، محمود جان

فزیو تھراپی کے شعبے کو بہتر بنانے کیلئے حکومت معاونت کرے گی، محمود جان

پشاور(سٹی رپورٹر) محبوب میڈیکل انسٹی ٹیوٹ حبیب فزیو تھراپی کمپلیکس پشاور میں ورلڈ فزیو تھراپی ڈے کی مناسبت سے ایک سمینیار سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی سپیکر خیبر پختونخوا اسمبلی محمود جان نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ فزیو تھراپی میڈیکل سائنس کا ایک اہم حصہ ہے اور اسکی اہمیت کو ٹھکرایا نہیں جاسکتا انہوں نے کہا کہ گذشتہ چند سالوں کے دوران سرکاری سطح پر اور پرائیویٹ سطح پر فزیو تھراپی اداروں نے صوبہ بھر میں متعلقہ خدمات فراہم کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے انہوں نے کہا کہ مجھے یہ جان کر بہت خوشی ہوئی ہے کہ محبوب سکول آف فزیو تھراپی نے صوبہ میں سب سے پہلے ڈگری کورسز کا اجراء کیا مزید حبیب فزیو تھراپی کمپلیکس کی خدمات بھی کسی سے پوشیدہ نہیں ہیں 2005ء کے زلزلے کے دوران جسمانی اور ذہنی متاثرین کی بحالی اور پچھلی تین دہائیوں سے اس شعبہ میں ان کی خدمات قابل ذکر ہیں مجھے اس بات کی بھی خوشی ہے کہ پی ٹی آئی کے سابقہ دور حکومت میں ڈاکٹر محبوب الرحمان اسی ادارہ کے بانی اور سابق پروانشل کوارڈنیٹر برائے بحالی معذوران محکمہ صحت خیبر پختونخوا نے صوبہ بھر کے 25ڈسٹرکٹ ہیڈ کواٹر ہسپتالوں میں فزیو تھراپی کے شعبہ کے اجراء سے متعلقہ سہولیات لوگوں کی دہلیز تک پہنچائی گئیں اور اب موجودہ دور حکومت میں مذکورہ سہولیات تحصیل ہسپتالوں کی سطح پر متعارف کرائی جائیں گی جس کے ساتھ ساتھ لوگوں کو نئے روز گار کی سہولیات بھی ملیں گی اس کے علاوہ ہم فزیو تھراپی سروس سٹرکچر اور نئے آنے ولے فزیو تھراپسٹ گریجویٹس کیلئے ہائس جاب کے مواقع بھی فراہم کرنے کی کوشش کریں گے چیئرمین محبوب میڈیکل انسٹی ٹیوٹ ،حبیب فزیو تھراپی کمپلیکس کے بانی ڈاکٹر محبوب الرحمان نے کہا کہ ہماری کل آبادی کا 10-15 فیصد لوگوں کو جو کہ معذور ہیں فزیو تھراپی کی سہولیات کی ضرورت ہے جس میں ان کی بحالی ،تعلیم اور روز گار شامل ہیں کیونکہ مذکورہ شعبہ کو حسب ضرورت اہمیت نہیں دی جارہی انہوں نے مطالبہ کیا کہ ترجیحی بنیادوں پر مرکزی حکومت فزیو تھراپی کونسل کی منظوری دے جس کی مدد سے فزیو تھراپی شعبے کی معیاری تعلیم کے ساتھ ساتھ ملک بھر میں فزیو تھراپی کی سہولیات بھی فروغ پائیں گی اس موقع پر معذور افراد کیلئے حبیب فزیو تھراپی کمپلیکس میں ایک فری کیمپ کا انعقاد بھی کیا گیا جس میں فزیو تھراپی ،سپیچ تھراپی ،آڈیالوجی اور منصوعی اعضاء کیلئے معذوروں کا معائنہ کیا گیا اور علاج تجویز کیا گیا ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر