مردان ، حمایت اللہ مایار کو پی کے53کے ضمنی انتخابات میں تحفظات اور تنقید مہنگا پڑ گیا

مردان ، حمایت اللہ مایار کو پی کے53کے ضمنی انتخابات میں تحفظات اور تنقید ...

مردان( بیورورپورٹ)اے این پی کے ضلعی صدر حمایت اللہ مایار کو پی کے 53کے ضمنی انتخابات میں پارٹی ٹکٹ پر تحفظات اور تنقید مہنگا پڑگیا ،پارٹی کے صوبائی صدرنے شوکاز نوٹس جاری کرتے ہوئے تین دن کے اندراندر وضاحت طلب کرلی ہے یہ دوسرا موقع ہے کہ حمایت اللہ مایار کو پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی پر نوٹس مل گیاہے ذرائع کے مطابق عوامی نیشنل پارٹی نے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی کی خالی کردہ حلقہ پی کے 53کی صوبائی اسمبلی نشست پر سابق ایم پی اے احمد بہادرخان کو ٹکٹ جاری کیاتو اس پر پارٹی کے اندر تحفظات سامنے آنے لگے گذشتہ روز پارٹی کے دفتر میں منعقدہ اجلاس میں احمد بہادرخان نے شرکت نہیں کی اور اجلاس کے بعض مقررین نے اس پر شدید تحفظات کا اظہار کیا ضلعی صدر حمایت اللہ مایار نے بھی اس سلسلے میں پارٹی قیادت پر تنقید کرتے ہوئے کہاکہ پارٹی قیادت نے کارکنوں کو اعتماد میں نہیں لیا دریں اثناء پارٹی پالیسیوں کی مخالفت پر اے این پی کے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی نے حمایت اللہ مایار کو شوکازنوٹس جاری کرتے ہوئے ان سے تین دن کے اندر اندر وضاحت طلب کرلی ہے اس سلسلے میں حمایت اللہ مایار نے رابطے کرنے پر بتایاکہ اسے سوشل میڈیا کے ذریعے شوکاز کی اطلاع ملی ہے نوٹس ملنے پر اس کا جواب دوں گا یادرہے کہ اس سے پہلے مشال قتل کیس میں بھی پارٹی کے ضلعی صدر جو اس وقت ڈسٹرکٹ ناظم بھی تھے کو پارٹی نے شوکاز جاری کیاتھا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر