وزیر اعظم عمران خان سے اچھی بیٹنگ کی توقع

وزیر اعظم عمران خان سے اچھی بیٹنگ کی توقع
وزیر اعظم عمران خان سے اچھی بیٹنگ کی توقع

  

 الیکشنز 2018 آئے اور گزر گئے اور اس بار عوام پاکستان نے تیسری سیاسی جماعت کو اوپر آنے کا موقع دیا ہے ۔ تبدیلی کی امید لے کر  عوام نے اس دفعہ پی پی پی اور نون لیگ کو رد کر کے تحریک انصاف کو آزمانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ خان صاحب بلاشبہ ایک پڑھے لکھے سیاستدان ہیں ۔ پاکستان کی عوام خوشی سے پھولے نہیں سما رہی اور ہر ایک کو امید ہے کہ خان صاحب حقیقی تبدیلی کے لیےکچھ کریں گے ۔ اور  وطن عزیز پاکستان کو خوشحالی کا راستہ دکھائیں گے ۔ خان صاحب کو وزیر اعظم کے منصب پر عوام  نے پہنچا تو دیا ہے۔ مگرساتھ ہی  بیٹنگ کے لیے بہت مشکل وکٹ پر کھڑا دیا ہے   ۔آپ بھلے سے اچھے باولر رہے ہیں مگر اب بیٹنگ میں بھی ذرا حوصلہ دکھائیے۔ منصب سنبھالنے کے فوراً بعد بہت دبنگ سا خطاب بھی سننے کو ملا ۔ عوام مزید خوش ہوئی کہ کوئی آیا ہے پاکستان کی بات کرنے کے لیے ۔ بہت بڑے بڑے اعلان کر دیے گئے ہیں ۔ اللہ پاک خان صاحب کو ہمت اور طاقت دیں تا کہ وہ اپنے دعوے پورے کر سکیں ۔دوسری دفعہ خان صاحب عوام سے مخاطب ہوئے تو آتے ساتھ مسائل میں موجود ایک بڑے مسئلے یعنی پانی کی کمی کو پورا کرنے کی بات کی گئی ۔ بہت اچھی تھی تقریر عوام نے پھر سراہا ۔ لیکن مسائل کو حل کرنے کے لیے خان صاحب کی ٹیم کے پاس ویژن کی کمی نظر آ رہی ہے ۔

جتنے بڑے دعوے کیے گئے تھے ۔ ان دعوؤں کو پورا کرنے کا آغاز کچھ اچھا نہیں ہے ۔ کہیں وزیر خزانہ اسد عمرصاحب آئی ایم ایف کے پاس جانے کی بات کرتے ہوئے نظر آئے تو کہیں خان صاحب خود عوام پر تبدیلی کے کاغذ میں لپٹا ہوا بجلی اور گیس کا بم  گراتے ہوئے نظر آئے ۔

 عوام سے کیے گئے حالیہ خطاب میں خان صاحب نے ڈیم کی بات کی ،بہت اچھا لگا ۔ لیکن اس کام کو پورا کرنے کا فارمولا وہی گھسا پھٹا ۔ خان صاحب نے چندے کی اپیل کر کے عوام کو یہ کہنے پر مجبور کر دیا ہے کہ خان صاحب اگر ملک چندے پر ہی چلانا تھا تو یہ کام تو مسجد کا خادم بخوبی کر سکتا ہے ۔ محترم خان صاحب آپکو عوام سیلیوٹ پیش کرتی ہے کہ آپ نے کرپشن کے شہنشاہ کو سلاخوں کے پیچھے بھیجا اور عوام نے آپکے اسی جذبے کو سراہتے ہوئے آپکو وزارت عظمی کے منصب پر بٹھایا ہے ۔ عوام تو اس آس پر تھی کہ ملک کا لوٹا ہوا پیسا واپس لا کر ملک کی بنیادیں مضبوط کی جائیں گی۔ فی الحال تو میاں صاحب کو جیل بھیج کر عوام کو صرف ایک فائدہ ہوا ہے کہ عوام کو اپنے غم بھلانے کے لیے جگتوں اور مزاح کے لیے میاں صاحب مل گئے ہیں ۔

لیکن سر ملک چندوں اور جگتوں سے نہیں چلا کرتے ۔ میاں صاحب اور ہر کرپٹ کو جیل میں ڈال کر لوٹا ہوا پیسہ واپس لانے کی تدبیر کیجیے ۔ زرداری صاحب ، شرجیل میمن ، مشتاق رئیسانی ،احد چیمہ اور میاں صاحب کا لوٹا ہوا پیسہ واپس لانے کی تدبیر کریں ۔ ہم ایٹمی طاقت ہیں کوئی  چندے پر چلنے والی این جی او نہیں ۔ لیکن شاید عوام کو احساس ہونا شروع ہو گیا کہ آپ کے پاس سیٹیں تو ہیں لیکن قابل اذہان نہیں ہیں۔ خدارا عوام کے اس احساس کو جھوٹا ثابت کرنے کی کوشش کریں ۔ 

ہم اقرار کرتے ہیں کہ ٹارگٹ بہت بڑا ہے اور آپکی بیٹنگ ابھی سٹارٹ ہوئی ہے ۔ لیکن اگر سٹارٹ میں وکٹیں گرا دیں گے اور رن ریٹ سلو رکھیں گے تو آپ کے پاس وکٹیں بچانا اور لاسٹ اوورز میں زیادہ رن ریٹ سے سکور کرنا مشکل ہو جائے گا۔اللہ پاک نے آپکو میچ جیتنے کا زبردست موقع دیا ہے ۔ اور یہ میچ ترلوں اور منتوں سے نہیں ذہانت سے جیتنا پڑے گا ۔  ہمارے پیارے وطن کے پاس اچھے بیٹسمین موجود ہیں جو یہ میچ جتوا سکتے ہیں۔آپ کو صحیح معنوں میں پاکستان کا چیمپئن بننے کے لیے ذہانت اور محنت سے کھیلنا ہو گا۔ورنہ آپ اس ٹورنامنٹ سے باہر کر دیے جائیں گے ۔

۔۔

ادارے کا بلاگرز کے نقطہ نظر سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

مزید : بلاگ