ماضی میں شہرت کیلئے کئے گئے عدالتی فیصلوں سے ریاست کو اربوں کا نقصان ہوا:اٹارنی جنرل

ماضی میں شہرت کیلئے کئے گئے عدالتی فیصلوں سے ریاست کو اربوں کا نقصان ...
ماضی میں شہرت کیلئے کئے گئے عدالتی فیصلوں سے ریاست کو اربوں کا نقصان ہوا:اٹارنی جنرل

  

اسلام آباد(ویب ڈیسک) اٹارنی جنرل انور منصور خان نے کہا ہے ماضی میں شہرت کے لئے کئے گئے سپریم کورٹ کے فیصلوں سے ریاست کو اربوں روپیہ کا نقصان پہنچا۔

پیر کو نئے عدالتی سال کے موقع پر فل کورٹ ریفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا ماضی میں عدالت نے کئے مقدمات کے فیصلوں میں عالمی قوانین کا خیا ل نہیں رکھا اور شہرت کے لئے کئے گئے ان فیصلوں سے عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہوئی۔اٹارنی جنرل نے بنیادی حقوق کے تحفظ کے لئے عدالتی فعالیت اور عدالتی فیصلوں کا دفاع کیا اور کہا بنیادی حقوق سے متصادم قوانین کالعدم کرنے کا سپریم کورٹ کو اختیار حاصل ہے ،عدلیہ کو اپنی آزادی ہر قیمت پر برقرار رکھنی چاہیے ، انصاف ہونا چاہیے چاہے آسمان ہی کیوں نہ گر پڑے ۔

انور منصور خان نے کہا گذشتہ عدالتی سال میں بنیادی حقوق کے حوالے سے قابل ستائش اقدامات ہوئے ،گزشتہ سال 36,501مقدمات دائرہوئے جن میں سے 8,970 نمٹائے گئے ۔آئین ہر شخص کو ریاست کا وفادار ہونے کا پابند بناتا ہے ، انصاف کی فراہمی میں تاخیر انتہائی اہم مسئلہ ہے ، قانون سازوں کو بھی جدید دور کے تقاضوں کو سمجھنا ہوگا ،فراہمی انصاف میں پاکستان 113 میں سے 106 ویں نمبر پر ہے ، ورلڈ بینک کے مطابق لاہور میں مقدمات 1025، کراچی میں 1096دنوں میں نمٹائے جاتے ہیں ،غیر ضروری مقدمہ بازی پر درخواست گزاروں کو بھاری جرمانے ہونے چاہئیں ،انصاف کی فراہمی کیلئے مقدمات نمٹانے کا وقت متعین ہونا چاہیے ۔

اٹارنی جنرل نے کہا حکومت پولیس کی ناقص تفتیش کے مسائل حل کرنے میں سنجیدہ ہے ۔صدر سپریم کورٹ بار کلیم خورشید نے کہاسپریم کورٹ میں زیر التوا مقدمات کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے ، زیر التوا مقدمات میں زائد المعیاد اور غیر سنجیدہ مقدمات کی بڑی تعداد شامل ہے ،پاکستان ووٹ(بیلٹ) کی طاقت سے بنا نہ کہ بلٹ کے زور پر۔ ملک میں گاڑی، ٹول ٹیکس ، ایپٹما، بنک ، سیمنٹ اور شوگر مافیا عوام کا استحصال کر رہے ہیں ،ریاست مافیا سے عوام کو بچانے میں یکسر ناکام ہوچکی ہے ، پاکستانیوں کے پانچ ارب ڈالر 1992 سے نجی بنکوں میں پڑے ہیں،ان بنکوں اور سٹیٹ بنک کے گٹھ جوڑ سے عوام کو فائدہ نہیں ہونے دیا جا رہا، موٹروے پر ٹول ٹیکس 260 سے بڑھا کر 640 روپے کر دیا گیا،ریاستی زمین سرکاری ملازمین کو الاٹ کرنے پر ازخودنوٹس لیا جائے ۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد