توہین عدالت کیس، ڈاکٹر عامر لیاقت کی معافی مسترد، 27 ستمبر کو فرد جرم عائد کی جائے گی

توہین عدالت کیس، ڈاکٹر عامر لیاقت کی معافی مسترد، 27 ستمبر کو فرد جرم عائد کی ...
توہین عدالت کیس، ڈاکٹر عامر لیاقت کی معافی مسترد، 27 ستمبر کو فرد جرم عائد کی جائے گی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) سپریم کورٹ آف پاکستان نے تحریک انصاف کے رکن اسمبلی عامر لیاقت کی معافی مسترد کر دی ہے جس کے بعد 27 ستمبر کو ان پر فرد جرم عائد کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق آج سپریم کورٹ میں عامر لیاقت کے توہین عدالت کیس کی سماعت ہوئی۔ اس دوران چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ یہ کوئی طریقہ نہیں کہ توہین کر کے معافی مانگ لی جائے۔

عدالت میں معاملہ کی سماعت کے دوران سماعت عامر لیاقت کے ٹی وی پروگرامز چلائے گئے۔ چیف جسٹس نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کیا ہم یہاں تذلیل کروانے کیلئے بیٹھے ہیں۔

چیف جسٹس نے سوال کیا کہ کیا فرد جرم عائد ہونے کے بعد رکن قومی اسمبلی رہ سکتے ہیں؟ جس پر عامر لیاقت کا کہنا تھا کہ نہیں رہ سکتا۔

سابق ٹیلی ویژن میزبان عامر لیاقت نے 25 جولائی کو ہونے والے عام انتخابات میں تحریک انصاف کے ٹکٹ پر الیکشن لڑا تھا، جس میں کامیابی حاصل کرنے کے بعد وہ اس وقت رکن قومی اسمبلی ہیں۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد