تعلیم کے فروغ کیلئے پالیسیاں صوبوں کی مشاورت سے مرتب کرنے پر اتفاق 

  تعلیم کے فروغ کیلئے پالیسیاں صوبوں کی مشاورت سے مرتب کرنے پر اتفاق 

  

کراچی (این این آئی) وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود اور صوبائی وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ ہماری بھرپور کوشش ہے کہ ملک بھر میں تعلیمی معیار کو مزید بہتر بنایا جائے۔کورونا کے بعد ملک بھر میں تعلیم کے حوالے سے مشکلات ضرور ہوئی ہیں لیکن ہم کوشش کررہے ہیں کہ اس کا زیادہ سے زیادہ ازالہ کیا جاسکے، مشترکہ پالیسی کے باعث بہت سے مسائل کا حل ممکن ہوسکا ہے۔وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے جمعرات کے روز سعید غنی سے ان کے دفتر میں ملاقات کی۔ اس موقع پر شفقت محمود نے کہا کہ اس وقت ملک بھر کے تعلیمی اداروں کو کورونا کے باعث بندش کے تقریباً 6ماہ کے بعد 15سے 30ستمبر کے دوران مختلف فیز میں کھولنے کے مشترکہ فیصلے کے بعد ہمیں امید ہے کہ ہم آئندہ بھی تمام فیصلے مشترکہ طور پر کریں گے تاکہ تعلیم کو ملک بھر میں پروان چڑھایا جاسکے۔ کورونا کے بعد ملک بھر میں تعلیم کے حوالے سے مشکلات ضرور ہوئی ہیں لیکن ہم کوشش کررہے ہیں کہ اس کا زیادہ ازالہ کیا جاسکے۔ اس موقع پر سعید غنی نے کہا کہ ملک بھر میں کوروناکے بعد تعلیمی اداروں کے حوالے سے مشترکہ پالیسی کے باعث بہت سے مسائل کا حل ممکن ہوسکا ہے۔ تعلیمی نصاب، تعلیمی سال سمیت تمام پر صوبوں کی مشاورت سے ہم ملک بھر کے تعلیمی معیار کو بہتر بنا سکیں گے، البتہ یہ بات واضح ہے کہ جو بھی مشترکہ فیصلہ ہوا تواس کے نفاذ کا باقاعدہ اعلان صوبے ہی کریں گے۔ شفقت محمود نے کہا کہ ایک تاثر یہ دیا جارہا ہے کہ ہم انگریزی کو تعلیمی نصاب سے ختم کررہے ہیں یہ تاثر بالکل غلط ہے۔ ہم انگریزی کو بحیثیت ایک زبان نفاذ کررہے ہیں اور اس کا مقصد یہ ہے کہ ہم بچوں پر کسی قسم کا تعلیمی بوجھ نہیں ڈالنا چاہتے۔  تمام صوبوں کے مابین کمیونیکیشن کے فقدان کو ختم کرنا ہوگا تاکہ ہم زیادہ سے زیادہ اچھی اصلاحات تعلیم کے شعبے میں لاسکیں۔اس موقع پر  اتفاق کیا گیاکہ تمام صوبوں کی مشاورت سے تمام پالیسیاں مرتب کی جائیں گے۔ 

اتفاق 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -