سینیٹ کی انسانی حقوق کمیٹی نے سی سی پی اولاہور عمر شیخ کو بھی طلب کر لیا

سینیٹ کی انسانی حقوق کمیٹی نے سی سی پی اولاہور عمر شیخ کو بھی طلب کر لیا

  

 اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)موٹر وے پر بد اخلاقی کا شکار متاثرہ خاتون کے حوالے سے متنازع بیان دینے پر سی سی پی او لاہور عمر شیخ کو شدید تنقید کا سامنا ہے اور وفاقی وزیر انسانی حقو ق نے بھی اس معاملے کا نوٹس لے لیا۔سی سی پی او لاہور نے نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا خاتون رات ساڑھے 12بجے ڈیفنس سے گوجرانوالہ جانے کیلئے نکلیں، میں حیران ہوں تین بچوں کی ماں ہیں، اکیلی ڈرائیور ہیں، آپ ڈیفنس سے نکلی ہیں تو آپ جی ٹی روڈ واکا سیدھا راستہ لیں اور گھر چلی جائیں اور اگر آپ موٹروے کی طرف سے نکلی ہیں تو اپنا پیٹرول چیک کر لیں۔ ان کی گاڑی ہرگز نہیں خراب ہوئی اور ایک بجے جیسے ہی انہوں نے ٹول پلازہ عبور کیا تو اس کے چار کلومیٹر بعد ان کا پیٹرول ختم ہو گیا لیکن وہ کن حالا ت میں اتنی رات کو جا رہی تھیں اس بارے میں کچھ نہیں کہہ سکتا۔وفاقی وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری نے سی سی پی او کے بیان کو ناقابل قبول قررا دیتے ہوئے کہا ایک افسر کی جا نب سے خاتون کوبد اخلاقی کا نشانہ بننے پر ذمے دار ٹھہرائے جانا، یہ کہنا انہوں نے جی ٹی روڈ کیوں لیا اور یہ بھی کہ وہ بچوں کے ہمراہ اکیلی باہر کیوں نکلی، یہ سب بیان ناقابل قبول ہیں اور میں یہ معاملہ اٹھا رہی ہوں۔ سینیٹ کی انسانی حقوق کمیٹی نے  اس بیان کانوٹس لے لیا  اور اشتعال انگیز بیان دینے پر کیپیٹل سٹی پولیس آفیسر(سی سی پی او) لاہور عمر شیخ  کو بھی طلب کر لیا

سی سی پی او طلب

مزید :

صفحہ اول -