اوورسیز پاکستانی ہمارا بڑ ا سرمایہ، جتنے وفادار ملک سے باہر بیٹھے ہیں،اتنے شاید ملک میں نہیں: وزیراعظم 

    اوورسیز پاکستانی ہمارا بڑ ا سرمایہ، جتنے وفادار ملک سے باہر بیٹھے ...

  

 اسلام آباد(سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اوورسیز پاکستانی ہمارا سب سے بڑا سرمایہ ہیں، 90لاکھ پاکستانی بیرون ملک خد ما ت انجام دے رہے ہیں، بڑے منصوبوں میں اوورسیز پاکستانیوں کو شامل کریں گے، روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹ سے پاکستان میں سرمایہ کاری کی آسان سہولت میسر ہوگی۔ جمعرات کے روز روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا بیرون ملک پاکستانیز قومی تعمیر و ترقی میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔ روشن ڈیجیٹل اکاؤنٹ اوورسیز پاکستانیوں کیلئے بڑا اہم قدم ہے، ملکی ٹیکس کا آدھے سے زیادہ پیسہ قرضوں کی واپسی میں چلا جاتا ہے۔ تعمیرات کے شعبے کے فروغ سے دیگر صنعتوں کو بھی فروغ ملے گا۔ کاروبار میں آسانی کیساتھ اور سرمایہ کاروں کو ہر ممکن سہولت دے رہے ہیں۔اوورسیز پاکستانیوں کیلئے سرمایہ کاری کے مواقع پیدا کرناچاہتے ہیں۔ بہتر معاشی حالات اور مواقع کی فراہمی سے اوورسیز پاکستانیوں کو واپس ملک میں لایا جا سکتا ہے۔ اوورسیزپاکستانیز بینک کی برانچ، سفارتخانے یا قونصلیٹ آئے بغیر اکا ؤ نٹس کھلوا سکیں گے۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھاسمندر پار پاکستانیوں کو ایسا سمجھا جاتا ہے جیسے وہ غدار ہیں، جتنے وفادار ملک سے باہر بیٹھے ہیں، اتنے شاید ملک میں نہیں۔ سمندر پار پاکستانیوں کو شک کی نگاہ سے کیوں دیکھاجاتا ہے؟ ہر دوسرے دن لو گ دہری شہریت کیخلاف عدالت چلے جاتے ہیں۔حالانکہ باہر بیٹھے لوگوں کو احساس ہوتا ہے ملک کتنا اہم ہے۔اوورسیز پاکستانی کمیونٹی بڑے تعمیری شعبوں میں سرمایہ کاری کریں۔بعدازاں وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت نیشنل کوارڈینیشن کمیٹی برائے ہاؤسنگ، کنسٹرکشن اینڈ ڈویلپمنٹ کا اجلاس ہوا جس میں ریور راوی فرنٹ اربن ڈویلپمنٹ پرا جیکٹ اور بنڈل آئی لینڈ منصوبوں،ان کے خدو خال اور سرمایہ کاری کے اعتبار سے میسر بہترین مواقع کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ شعبہ تعمیرات سے وابستہ ملک کے بڑے سرمایہ کاروں نے دونوں منصوبوں میں گہری دلچسپی کا اظہار کیا، سہولیات کی فراہمی پر گورنر سٹیٹ بنک کے متحرک کردار کو سراہا۔ چیف سیکر ٹر ی پنجاب نے لاہور سمیت صوبہ کے بڑے شہروں بشمول راولپنڈی، فیصل آباد، ملتان، گوجرانوالا، ڈی جی خان، سیالکوٹ اور ساہیوال کے ماسٹر پلانز کو ازسر نو مرتب کرنے کے حوا لے سے ٹائم لائنز وزیرِ اعظم کو پیش کیں۔ وزیرِ اعظم نے کہا دونوں منصوبے معیشت کے فروغ کے حوالے سے اہم سنگ میل ثابت ہوں گے۔دریں اثناء وزیرِ اعظم عمران خان ہی کی زیر صدارت گندم، چینی کی دستیابی اور قیمتوں سے متعلق اجلاس ہوا، وزیر اعظم کو گندم کی دستیابی،صوبہ پنجاب کی یومیہ ریلیز، گندم، آٹے کی قیمت، مستقبل کی ضروریات پورا کر نے،نجی شعبے کی جانب سے اب تک درآمد کی جا نیوالی گندم کی مقدار، آئندہ ملک پہنچنے والی گندم کی صورتحال پر بریفنگ دی گئی جبکہ وزیر صنعت حماد اظہر نے چینی کی مو جودہ قیمتوں اور درآمد سے متعلق صورتحال پر بریفنگ دی، اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ گندم کی وافر مقدار میں فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے ٹی سی پی کی جانب سے بھی گندم درآمد کی جائیگی،وزیراعظم عمران خان نے بریفنگز پر اظہار اطمینان کی اور کہا گندم کی وافر دستیابی،مناسب قیمتوں کو یقینی بنانا حکومت کی اولین ترجیح ہے تاکہ عوام کو خوراک کے ضمن میں دقت کا سامنا نہ ہو،بعد ازاں وزیراعظم عمران خان سے ازبکستان کے نائب وزیراعظم سردورعمرزیکوف نے ملاقات کی،جس میں کورونا وائرس، دوطرفہ تعلقات اور علاقائی امن و سلامتی کی صورتحال پر تبا د لہ خیال کیا گیا جبکہ دوطرفہ تعاون مضبوط بنانے کے عزم کا اعادہ کیا گیا۔ وزیراعظم کا کہنا تھا پاکستان اور ازبکستان کے درمیان گہرے برادرانہ تعلقات ہیں۔ افغا ن تنازع کا کو ئی فوجی حل نہیں، افغان امن عمل میں پاکستان کا ہمیشہ مثبت کردار رہا ہے۔ توقع ہے انٹرا افغان مذاکرات جلد شروع ہو نگے، مسئلے کا تصفیہ ہوگا جس سے افغانستان میں امن سے خطے میں استحکام اور خوشحالی آئیگی۔سردورعمرزیکوف ازبکستان نے صدر ازبکستان کا نیک تمناؤں کا پیغام پہنچایا اور کہا وہ دورہ پاکستان ے منتظر ہیں۔

وزیراعظم 

مزید :

صفحہ اول -