جرائم پیشہ عناصر کا قلع قمع پنجاب پولیس کا نصب العین ہے، آئی جی انعام غنی 

جرائم پیشہ عناصر کا قلع قمع پنجاب پولیس کا نصب العین ہے، آئی جی انعام غنی 

  

 لا ہو ر (کر ائم رپو رٹر)انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب انعام غنی نے کہا ہے کہ معاشرے میں قانون کی بالادستی کو برقرار رکھتے ہوئے شہریوں کو سروس ڈلیوری کی باآسانی فراہمی اور جرائم پیشہ عناصر کا قلع قمع پنجاب پولیس کا نصب العین ہے چنانچہ سینئر افسران جدید اور عوام دوست پولیسنگ کے ساتھ بھرپور انسدادی کاروائیوں سے معاشرے میں احساس تحفظ کی فضا کو فروغ دیں۔ کرپشن کا خاتمہ اور اختیارات سے تجاوز کرنے والوں کے خلاف بلا تفریق کارروائی میری اولین ترجیحات میں ہیں اور اس سلسلے میں موثر پالیسیوں کے ذریعے ہر ممکن اقدامات کو یقینی بنایا جائے گا۔ انہوں نے افسران کوہدایت کی کہ صوبے کے کسی بھی ضلع میں رونما ہونے والے ہر جرم کی ایف آئی آر ضرور درج کریں تاکہ نہ صرف ہمیں اصل کرائم کا پتہ چلے بلکہ ان پر قابو پانے کیلئے ورکار وسائل کا بخوبی اندازہ ہوسکے۔ انہوں نے مزیدکہاکہ کوئی سینئر یا جونیئر افسر میرا فیورٹ کوئی نہیں ہے میرے نزدیک وہ ہو گاجو عوامی خدمت اور کارکردگی میں آگے ہو گاچنانچہ تمام افسران عوامی خدمت کو صدق دل سے اپنا شعار بنائیں۔ انہوں نے تاکید کی کہ شہریوں کے درپیش مسائل کے فوری ازالے کیلئے تمام افسران اوپن ڈور پالیسی کے تحت اپنے دفاتر کے دروازے سب کیلئے کھلے رکھیں اور مخلو ق خدا کی خدمت کیلئے دنیا و آخرت کی کامیابی کا سامان پیدا کریں۔ 

انہوں نے مزیدکہاکہ شہریوں کے ساتھ بہتر رویہ، فرائض منصبی کی بہترین ادائیگی اور پبلک سروس ڈلیوری کو بہتر بنا کر ہی پولیس اور عوام کے درمیان اعتماد کی فضا مزید بہتر ہوسکتی ہے لہذا تمام افسران سروس ڈلیوری کی بہتری اور پولیس فورس کے رویے میں تبدیلی کیلئے تھانوں اور دفاتر کے دوروں میں تیزی کریں اور اپنے ماتحت اہلکاروں کو پبلک ڈیلنگ کے حوالے سے خصوصی بریفنگ دیں تاکہ وہ دوران ڈیوٹی اپنے فرائض منصبی بہتر سے بہتر انداز میں ادا کر کے شہریوں کے دل جیت سکیں۔ انہوں نے مزیدکہاکہ پولیس فورس میں پہلے جزااور پھر سزا کے عمل پر کیا جائے لہذا تمام افسران بہترین کارکردگی سے شہریوں کی مشکلات کے ازالے اور جرائم پیشہ عناصر کے خلاف سر گرم عمل رہیں انکی ہر سطح پر مناسب حوصلہ افزائی کیلئے اقدامات کا سلسہ جاری رہے گا۔ ان خیالات ک اظہار انہوں نے آج سنٹرل پولیس آفس میں لاہورپولیس کے اعلی افسران کے اجلاس اور آر پی اوز، ڈی پی اوزوایڈیو لنک کانفرنس کے دوران صوبے کے تمام افسران کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کیا۔دوران کانفرنس آئی جی پنجاب نے صوبے کے تمام آر پی اوز، سی پی اوز اور ڈی پی اوز کو اپنی پالیسی اور ترجیحات کے بارے میں آگاہ کیا اور انہیں عمل درآمد کیلئے تمام دستیاب وسائل کو بروئے کار لانے کی ہدایت کی۔ انہوں نے مزیدکہاکہ ملزمان کو غیر قانونی حراست میں رکھنے والے افسران واہلکارکسی رعائیت کے مستحق نہیں کیونکہ ان چند کالی بھیڑوں کی وجہ سے پوری فورس کو تنفید کا سامنا کرنا پڑتا ہے لہذا تمام افسران پولیس حراست میں تشدد سے ہلاکت کے ذمہ داران کے خلاف محکمانہ اور قانونی کاروائی میں ہر گز تاخیر نہ کریں۔انہوں نے مزیدکہاکہ منشیات فروشوں، قبضہ مافیا اور بھتہ خوروں کے خلاف موثر کاروائیاں نہ کرنے والے افسران خود کو محکمانہ کاروائی کیلئے تیار رکھیں۔انہوں نے مزید کہا کہ صوبے کے تمام اضلاع میں غیر قانونی اور بغیر لائسنس اسلحہ رکھنے والوں کے خلاف کریک ڈا?ن میں مزید تیزی لائی جائے اور دھاتی وکیمیکل ڈور کی تیاری اور پتنگوں کی تیاری، استعمال اور خریدو فروخت میں پابندی پر عمل در آمد کو سختی سے یقینی بنایا جائے۔ کانفرنس میں ایڈیشنل آئی جی، پی ایچ پی، کیپٹن (ر) ظفر اقبال، ایڈیشنل آئی جی، آئی اے بھی اظہر حمید کھوکھر، ایڈیشنل آئی جی لاجسٹکس اینڈ پروکیورمنٹ، علی عامر ملک، ایڈیشنل آئی جی ٹریننگ، شاہد حنیف، ایڈیشنل آئی جی اسٹیبلشمنٹ پنجاب، بی اے ناصر،ایڈیشنل آئی جی آر اینڈ ڈی، غلام رسول زاہد، ایڈیشنل آئی جی آپریشنز پنجاب، ذوالفقار حمید، ایڈیشنل آئی جی سی ٹی ڈی، محمد طاہر رائے اور ڈی آئی جی زعیم اقبال شیخ سمیت دیگر افسران بھی موجود تھے جبکہ لاہور پولیس کے اجلاس میں سی سی پی او لاہور محمد عمر شیخ، ڈی آئی جی آپریشنز اشفاق احمد خان اور ڈی آئی جی انویسٹی گیشن شہزادہ سلطان سمیت دیگرتمام افسران نے شرکت کی۔ 

مزید :

علاقائی -