دستاویزی ثبوت، مقدمہ خارج، چینی باشندے کو فوری رہا کرنیکا حکم

  دستاویزی ثبوت، مقدمہ خارج، چینی باشندے کو فوری رہا کرنیکا حکم

  

وہاڑی،گگو منڈی(بیورورپورٹ،نامہ نگار) چینی مسلمان شہری کی کمپنی میں کام کرنیوالے ملازمین نے چینی مسلمان کوکمپنی کی رقم واپس کردینے کاجھانسہ دے کرپولیس تھانہ فتح شاہ سے سازبازکرکے مقدمہ درج کرادیا۔چینی مسلمان شہری،اس کے اکاؤنٹنٹ اوراکاؤنٹنٹ کے والدکوگرفتارکرکے رات بھرحوالات میں بندرکھاعلاقہ مجسٹریٹ نے دستاویزی ثبوت دیکھنے کے بعدمقدمہ خارج کرنے اورچینی شہری کوفوری رہائی کاحکم دے دیا۔تفصیل کے مطابق چینی شہری جی ینگ فو(حاجی محمد(بقیہ نمبر47صفحہ6پر)

 یوسف)نے میڈیا کو بتایاکہ بورے والا کے نواحی گاؤں 495/ ای بی کے دوحقیقی بھائی حمزہ اورعاشر اسکی کمپنی پاک چائنہ بوسکی کے ملازم تھے جن کے ذمہ کمپنی کی 5لاکھ40 ہزارروپے کی رقم واجب الاداہے جس کی ادائیگی کے لئے گذشتہ روزانہوں نے اپنے گاؤں بلوایااور ایک پولٹری فارم پرلے جاکرمجھے میرے اکاؤنٹنٹ اوراسکے والد کومحبوس کئے رکھا جہاں میرے اکاؤنٹنٹ اوراسکے والدپرتشددکرنے کے بعدہمیں قتل کی دھمکیاں دیکروہاں سے بھگادیامیں نے جس کی اطلاع پولیس ریسکیو 15پردی لیکن پولیس نیمبینہ طورپر4گھنٹے کے بعدہم سے رابطہ کیااوراپنے ساتھ تھانہ فتح شاہ لے گئے تھانہ میں جاکرمیرے ہی خلاف فارنرایکٹ کے تحت جھوٹامقدمہ درج کرکے مجھے اورمیرے اکاؤنٹنٹ کوحوالات میں بندکردیاآج عدالت نے میرے دستاویزی ثبوت دیکھ کرڈسچارج کردیاجی ینگ فو(حاجی محمد یوسف)نے بتایاکہ وہ دس سال سے پاکستان میں بزنس کررہے ہیں اورپاکستانی قوانین کی مکمل پاسداری کرتے ہوئے کاروباری ٹیکس بھی اداکررہے ہیں لیکن تھانہ فتح شاہ پولیس نے میری مددکرنے کے بجائے میری کمپنی کے ملازمین سے ساز بازہوکرانکے خلاف کاروائی کرنے کی بجائے میرے خلاف مقدمہ درج کرکے نہ صرف ملزمان کو تحفظ فراہم کیابلکہ میرے ساتھ زیادتی کرتے ہوئے میری کاروباری ساکھ کوبھی نقصان پہنچایاہے انہوں نے آئی جی پنجاب سے مطالبہ کیاہے کہ پولیس کے جانبدارانہ رویہ اور ہمارے ساتھ گاؤں میں ملزمان کی طرف سے کئے جانے والے تشدداورزیادتی کانوٹس لیکرمجھے انصاف فراہم کیاجائے۔

حکم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -