حکومت نیب کو اپوزیشن کیخلاف استعمال کررہی ہے،رانا ثنا ء اللہ

حکومت نیب کو اپوزیشن کیخلاف استعمال کررہی ہے،رانا ثنا ء اللہ

  

لاہور(جنرل رپورٹر) مسلم لیگ (ن) پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ نے کہا ہے کہ زلفی بخاری اور سونامی ٹری کیخلاف چھ انکوائریاں شروع لیکن کسی کو نہیں بلایا جاتا۔اپوزیشن کے لوگوں تھرڈ کرنے کیلئے بلایا جاتا ہے۔نیب کے اداروں کو حکومت اپوزیشن کیخلاف سیاسی انتقام بنانے کیلئے استعمال کررہی ہے۔یہ لوگ اپنے ضمیر کیخلاف جاکر سارا معاملہ کررہے ہیں۔اصل مجرم بنی گالہ اور وزیر اعظم ہاؤس میں بیٹھے ہیں۔اپوزیشن بیس تاریخ کو اپنا متفقہ لائحہ عمل بنائے گی۔یہ منفی ہتھکنڈے ہمارا راستہ نہیں روک سکتے۔نیب اپنے ناک پر بیٹھی مکھی نہیں اڑا سکتا۔یہ سب کچھ حکومت کررہی ہے۔حکومتی لوگوں کو نیب کے بلانے کا مطلب حساب برابر کرنا ہے۔میرے تمام اکاؤنٹس اور پراپٹی ڈکلیئر ہیں۔نوٹس دینا نیب کی مجبوری ہے۔نیب مجبور ہوکر سب کچھ کررہا ہے۔لاہور نیب آفس میں پیشی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رانا ثناء اللہ نے کہا نالائق اور نا اہل ٹولے سے جب تک آزادی نہیں ملتی اس وقت میڈیا،اپوزیشن اور عوام کو ان سے آزادی نہیں ملے گی۔نیب کو جب اوپر سے آڈر آئے تو وہ مطمئن ہو جاتا ہے۔پنجاب میں گڈ گورننس کی پاداش میں پانچ آئی جی تبدیل ہو گئے۔انعام غنی میرٹ پر کام کرنے والے افسر ہیں۔انعام غنی نے خود بتایا دیا کہ میں ایک سیکشن آفیسر کے نوٹیفیکیشن کی مار ہوں۔ایف آئی اے کے سربراہ بشیر میمن پر دباؤ ڈالا کہ اپوزیشن کے لوگوں کو گرفتار کرو۔وزیراعظم نے میرے متعلق بھی بشیر میمن کو کہا کہ رانا ثناء اللہ کیخلاف کچھ نکالو۔

رانا ثنا ء اللہ

مزید :

صفحہ اول -