بے نیازی بھی آن بان بھی ہے

بے نیازی بھی آن بان بھی ہے
بے نیازی بھی آن بان بھی ہے

  

بے نیازی بھی آن بان بھی ہے

ٓان بتوں میں خد اکی شان بھی ہے

المدد اے فغانِ عالم سوز!

اس زمین پر اک آسمان بھی ہے

کبھی اس سے بھی مل لیا کیجیے

ظالموں میں اک آسمان بھی ہے

حضرتِ دل اسے کہاں ڈھونڈوں

کچھ پتہ بھی ، کوئی نشان بھی ہے

حشر کو آپ کیوں نہ پیار کریں

خوب صورت بھی ہے، جوان بھی ہے

شاعر: حشر کاشمیری

Be Nayaazi Bhi , Aan Baan Bhi Hay

Un Buton Men Khuda Ki Shasan Bhi Hay

ASlmadad Ay Fughaan e Aaalam Soz

Iss  Zameen Par Ik Aasmaan Bhi Hay

Kabhi Iss Say Bhi Mil Lia Kijiay

Zaalmon Men Ik Aasmaan Bhi Hay

Hazrat e Dil Usay Kahaan Dhonden

Kuch Pataa Bhi, Koi Nishaan Bhi Hay

Hashr Ko Aap Kiun Na Payaar Karen

Khoobsurat Bhi Hay, Jawaan Bhi Hay

Poet: hashr Kashmiri

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -سنجیدہ شاعری -