موٹروے زیادتی کیس، جنگل سے کھوج کے دوران تحقیقات کاروں کو کیا شواہد ملے ہیں ؟ بڑی پیشرفت 

موٹروے زیادتی کیس، جنگل سے کھوج کے دوران تحقیقات کاروں کو کیا شواہد ملے ہیں ؟ ...
موٹروے زیادتی کیس، جنگل سے کھوج کے دوران تحقیقات کاروں کو کیا شواہد ملے ہیں ؟ بڑی پیشرفت 
کیپشن:    سورس:   Courtesy: Social Media

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن ) گجرپورہ موٹروے پر خاتون سے زیادتی کے کیس میں اہم پیشرفت سامنے آئی ہے قانون نافذ کرنے والوں کو جنگل سے دوران کھوج نئے شواہد مل گئے ہیں ۔

نجی ٹی وی جیونیوز نے ذرائع کے حوالے سے کہاہے کہ قانو نافذ کرنے والے اداروں کو جنگل سے کھوج کے دوران خاتون سے لوٹی گئی طلائی انگوٹھی اور گھڑی مل گئی ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ خاتون سے ڈکیتی کے بعد ڈاکو اسے کھائی میں لے گئے تھے، ڈاکوو¿ں نے خاتون سے ایک لاکھ نقدی اور زیورات لوٹے تھے، انگوٹھی اور گھڑی ڈاکوو¿ں کے فرار کے دوران گرنے کا امکان ہے۔ذرائع کے مطابق تفتیشی اہلکاروں کو دن کی روشنی میں لوٹی ہوئی اشیاءملیں جنہیں فنگر پرنٹ تجزیے کے لیے بھجوا دیا گیا ہے۔

9 ستمبر کو لاہور کے علاقے گجر پورہ میں موٹر وے پر خاتون کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کا واقعہ پیش آیا۔اطلاعات کے مطابق دو افراد نے موٹر وے پر کھڑی گاڑی کا شیشہ توڑ کر خاتون اور اس کے بچوں کو نکالا، موٹر وے کے گرد لگی جالی کاٹ کر سب کو قریبی جھاڑیوں میں لے گئے اور پھر خاتون کو بچوں کے سامنے زیادتی کا نشانہ بنایا۔

ایف آئی آر کےمطابق گوجرانوالہ سے تعلق رکھنے والی خاتون رات کو تقریباً ڈیڑھ بجے اپنی کار میں اپنے دو بچوں کے ہمراہ لاہور سے گوجرانوالہ واپس جا رہی تھی کہ رنگ روڈ پر گجر پورہ کے نزدیک اسکی کار کا پیٹرول ختم ہو گیا۔پولیس کے مطابق زیادتی کا شکار خاتون کے میڈیکل ٹیسٹ میں خاتون سے زیادتی ثابت ہوئی ہے۔خاتون کے رشتے دار کی مدعیت میں پولیس نے مقدمہ درج کر لیا۔

مزید :

قومی -