موٹروے پر خاتون کے ساتھ زیادتی کے بعد ایک اور بڑی ڈکیتی کا واقعہ، ڈاکوﺅں نے کیسا لباس پہن رکھا تھا اور کس شخص کی حاضر دماغی کے باعث وہاں سے فرار ہو گئے ؟ جانئے 

موٹروے پر خاتون کے ساتھ زیادتی کے بعد ایک اور بڑی ڈکیتی کا واقعہ، ڈاکوﺅں نے ...
موٹروے پر خاتون کے ساتھ زیادتی کے بعد ایک اور بڑی ڈکیتی کا واقعہ، ڈاکوﺅں نے کیسا لباس پہن رکھا تھا اور کس شخص کی حاضر دماغی کے باعث وہاں سے فرار ہو گئے ؟ جانئے 

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )ابھی سیالکوٹ موٹروے پر خاتون کے ساتھ بچوں کے سامنے زیادتی کرنے والے مجرموں کا سراغ نہیں لگا تھاکہ گزشتہ رات موٹروے پر ایک اور ڈکیتی کی واردات ہوئی جس دوران ڈاکوﺅں نے بڑی دیدہ دلیری کے ساتھ راستے میں درخت گرا کر گاڑیوں کو روکا اور لوٹ مارشروع کر دی لیکن ایک ایمبولینس کے ڈرائیور کی حاضر دماغی کے باعث ڈاکو زیادہ نقصان نہ کر سکے اور فرار ہو گئے ۔

تفصیلات کے مطابق جمعرات کی شب لاہور اسلام آباد موٹروے پر شیخو پورہ کے قریب ڈاکوﺅں نے درخت گرا کر گاڑیوں کو روکا اور لوٹ مارشروع کر دی ، اس واقعہ کے عینی شاہد بھی منظر عام پر آ گیاہے اور انہوں نے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ میں ایمبولینس میں جارہا تھا میرے آگے تقریباً 20 گاڑیاں ڈاکوو¿ں نے روک رکھی تھیں،ڈاکوو¿ں نے ایلیٹ فورس جیسی وردیاں پہنی ہوئی تھیں،ابھی اسکردو کے ایک کارسوارسے ڈاکوو¿ں نے لوٹ مارکی تھی کہ میں نے سائرن بجا دیا،میں نے ایمبولینس کا ہوٹرچلایا توڈاکو پولیس کی گاڑی سمجھ کر فرارہوگئے۔ عینی شاہد نے بتایا کہ ڈکیتی کا واقعہ ہرن میناراورشیخو پورہ کے درمیان پیش آیا۔

میڈیا میں چلنے والی رپورٹس میں بتایا گیا کہ ڈاکووں نے لاہور اسلام آباد موٹر وے پر درخت پھینک کر گاڑیوں کو روکا، گولیاں مار کر کئی گاڑیوں کے ٹائر بھی برسٹ کر دیے۔موٹر وے پر مسلح ڈکیتی کی واردات شیخوپورہ انٹر چینج سے 3 کلو میٹر دور اسلام آباد کی طرف ہوئی، ڈاکو کئی گاڑیوں کو لوٹ کر باآسانی فرار ہو گئے۔مسافروں نے موٹر وے پولیس کو اطلاع دی تاہم کوئی جواب نہ ملا، ون فائیو پر اطلاع کے بعد پولیس جائے وقوعہ پر پہنچی۔

خیال رہے کہ دو روز قبل بھی موٹر وے پر گجرپورہ کے قریب مسلح افراد ایک گاڑی کے شیشے توڑ کر خاتون کو زبردستی اپنے ساتھ لے گئے اور پھر اسے بچوں کے سامنے زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔

مزید :

قومی -