اینٹی کرپشن کی کارروائیاں، آدھا درجن سے زائد کرپٹ ملازمین گرفتار

اینٹی کرپشن کی کارروائیاں، آدھا درجن سے زائد کرپٹ ملازمین گرفتار

  

لاہور(اپنے نمائندے سے)اینٹی کرپشن کا کرپٹ سرکاری ملازمین کے خلاف مختلف شہروں میں بڑا کریک ڈاؤن لاہور، قصور، سیالکوٹ، ملتان راولپنڈی سے پولیس، محکمہ مال اور دیگر محکموں کے آدھا درجن سے زائد کرپٹ ملازمین گرفتار ٹریپ ریڈ کے دوران ملزمان  سے رشوت کے ہزاروں روپے برآمد ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب محمد گوہر نفیس کا سرکاری محکموں میں چْھپی کالی بھیڑوں کے خلاف زیرو ٹالرینس کا اعادہ کیا۔لاہور ریجن بی نے اینٹی کرپشن عدالت سے دو دو سال سزا اور دو دو لاکھ جرمانہ کی سزا سنائے جانے پر محکمہ مال کے تین ہیڈ کلرک گرفتار کر لئے۔ ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب نے کہاکہ ملزمان کو سپیشل جج اینٹی کرپشن نے مقدمہ نمبر 327/2010 میں سزائیں پانے والوں میں ہیڈ کلرکس امان اللہ، نذیر احمد اور شکیل احمد شامل ہیں اینٹی کرپشن راولپنڈی نے سابق نائب تحصیلدار ریٹائرڈ نصار احمد کو گرفتار کر لیاملزم کو عدالت پہلے جعلسازی کے مقدمہ میں مفرور قرار دے چْکی تھی  راجن پور سے پولیس کانسٹیبل شہزاد حسین کو ٹریپ ریڈ کر کے گرفتار کیا گیاکانسٹیبل شہزاد حسین نے مدعی سے تیس ہزار روپے بطور رشوت وصول کئے بہاولنگر سے مفرور ملزم محمد نوید کو اینٹی کرپشن نے گرفتار کر لیا جبکہ تھانہ حاجی پورہ سیالکوٹ سے پولیس ہیڈ کانسٹیبل محمد یاسین رنگے ہاتھوں گرفتار کر لیا۔ ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب گوہر نفیس کا کہنا تھا کہ ہیڈ کانسٹیبل نے پچاس ہزار روپے رشوت وصول کی ملزم کو جوڈیشل مجسٹریٹ  کی موجودگی میں ٹریپ ریڈ کر کے گرفتار کیا گیاسب رجسٹرار آفس ملتان سے سینئر کلرک عمر دراز  رنگے ہاتھوں گرفتار۔ ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب نے کہا کہ ملزم عمر دراز سے رشوت کے پانچ ہزار برآمد کرلئے گئے ملزم کے خلاف تھانہ اینٹی کرپشن ملتان میں مقدمہ درج کر لیا گیا پنجاب بھر میں کرپٹ سرکاری ملازمین کے خلاف بلاامتیاز کاروائیاں جاری ہیں۔

اینٹی کرپشن کارروائیاں 

مزید :

صفحہ آخر -