ایم پی اے اور سرکاری افسران سمیت 10 افراد کے خلاف جنسی زیادتی کے جھوٹے مقدمے درج کرانے والی خاتون، خود کے خلاف جسم فروشی سمیت کتنے مقدمات ہیں؟

ایم پی اے اور سرکاری افسران سمیت 10 افراد کے خلاف جنسی زیادتی کے جھوٹے مقدمے ...
ایم پی اے اور سرکاری افسران سمیت 10 افراد کے خلاف جنسی زیادتی کے جھوٹے مقدمے درج کرانے والی خاتون، خود کے خلاف جسم فروشی سمیت کتنے مقدمات ہیں؟
سورس: maxpixel

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پنجاب کے دارالحکومت لاہور سے تعلق رکھنے والی ایک خاتون کے بارے میں انکشاف ہوا ہے کہ اس نے ایک رکنِ پنجاب اسمبلی اور سرکاری افسران سمیت 10 افراد کے خلاف جنسی زیادتی کے جھوٹے مقدمات درج کرائے۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق عظمیٰ شہزادی نامی خاتون نے لاہور، رحیم یار خان، لودھراں، ملتان اور احمد پور شرقیہ میں فرضی ناموں کے ساتھ جھوٹے مقدمات درج کرائے۔ اس نے مقدمات کے اندراج کیلئے تحریم، خنسہ، شازیہ اور طیبہ کے ناموں کا استعمال کیا۔

پولیس حکام کے مطابق عظمیٰ شہزادی نے ایک رکنِ پنجاب اسمبلی، محکمہ داخلہ اور انکم ٹیکس کے افسران سمیت  10 افراد کے خلاف جنسی زیادتی کے مقدمات درج کرائے جو تفتیش میں جھوٹے ثابت ہونے کی بنا پر خارج کردیے گئے۔ خاتون کے اپنے خلاف جسم فروشی، فراڈ، چوری، دھمکیاں دینے اور دھوکہ دہی کے الزامات کے تحت سات مقدمات درج ہیں۔

مزید :

جرم و انصاف -علاقائی -پنجاب -لاہور -