پابندی کے پاوجود وا سا کے کڑوڑوں روپے کے ٹینڈر جاری

پابندی کے پاوجود وا سا کے کڑوڑوں روپے کے ٹینڈر جاری

                              لاہور (جاوید اقبال) واسا نے میٹروبس پروجیکٹ کے مکمل ہونے کے باوجود مختلف کاموں کے لئے کروڑوں روپے سے زائد مالیت کے کاموں کے ٹینڈر جاری کردئیے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ میٹرو بس پروجیکٹ پر تمام ترقیاتی کام مکمل ہوچکے ہیں اور واسا نے الیکشن کمیشن کی طرف سے تمام اقسام کے ترقیاتی کاموں اور سکیموں پر پابندی عائد کررکھی ہے مگر واسا نے اس پابندی کا کھلم کھلا مذاق اڑاتے ہوئے ایسے کاموںکے ٹینڈر جاری کردیئے ہیں جو مکمل ہوچکے ہیں جبکہ جن کاموں کے لئے ٹینڈر جاری کئے گئے ہیں ان کے مطابق کارپٹ ہونے والی سڑکوں کو دوبارہ اکھاڑا جائے گا جو ممکن نہیں ہے اس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ یہ ٹینڈر قوانین کے برعکس ٹینڈرنگ کے بغیر کرائے گئے کاموں کو قانونی تحفظ دینے کے لئے جاری کئے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ نگران حکومت کے لئے واسا کی غیر قانونی حرکت بہترین ٹرائل کیس کے طور پر سامنے آئی ہے۔ یہ ٹینڈرز ڈائریکٹراکرام طور کی طرف سے جاری کئے گئے ہیں۔ واسا کی طرف سے جاری کئے گئے ترقیاتی کام کرانے کے لئے ٹینڈر کی شق نمبر 2کے مطابق میٹروبس سروس کے کی جین مندرسے لاہور کینال تک واٹر سپلائی لائن کی تبدیلی کا ساڑھے آٹھ لاکھ کا ٹینڈر دیا گیا ہے ٹینڈکی شق نمبر 5میں لٹن روڈ پر میٹروبس منصوبہ کے لئے واٹر سپلائی کی لائنوں کی مرمت کے نام پر 25 لاکھ 65ہزار کا ٹینڈر جاری کیا گیا ہے۔ اس طرح شق نمبر 6میں شاہ جمال سے واٹر سپلائی لائنوں کی تبدیلی اور مرمت کے نام پر 14لاکھ 29ہزار کا ٹینڈر جاری کیا گیا ہے۔ شق نمبر 7میں میٹرو بس کے روڈ کی ری لوکیشن کے لئے 8لاکھ 51ہزار کے ترقیاتی کاموں کے ٹینڈرز جاری کئے گئے ہیں۔ شق نمبر 9کینال لنک روڈ کے لئے مین ہولوں کو اونچا کرنے کے نام پر 9لاکھ 62ہزار کے ٹینڈر جاری کئے گئے ہیں۔ اس طرح ٹینڈر کی شق نمبر 10کے تحت ملتان روڈ سے سمن آباد کے لئے پائپ جس کی جسامت کا سائز 4انچ، 6انچ ، 8انچ اور 12 انچ جاری کیا گیا ہے اس کام کی مالیت19لاکھ 50ہزار بتائی گئی ہے۔ اس طرح جین مندر اور بوڑھ والا چوک میں پائپ لائن کی مرمت کے نام پر ساڑھے 8لاکھ کا ٹینڈر جاری کیا گیا ہے۔ ٹینڈر کھولنے کی تاریخ 30اپریل مقرر کی گئی ہے۔ذرائع نے بتایا ہے کہ یہ تمام کام موقع پر ہوچکے ہیں فرضی کاموں کے لئے ٹینڈر جاری کئے گئے ہیں یا پرانی تاریخوں میں کام کرکے نئے سرے سے غیر قانونی طور پر ٹینڈر جاری کئے گئے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ جن جگہوں پر ترقیاتی کام جاری کئے گئے ہیں اکثر واٹر سپلائی پائپ گزارنے یا مرمت کے نام سے جاری ہیں۔ مگر موقع پر میٹرو بس منصوبے کی روڈز مکمل ہوچکی ہیں اور باقاعدہ کارپٹ بھی کردی گئی ہیں جنہیں اکھاڑا نہیں جاسکتا۔ اس حوالے سے واسا کے ڈائریکٹر انوار احمد طور کا کہنا ہے کہ ٹینڈر ضرور جاری کئے ہیں کام بھی کروائیں گے پرانی تاریخوں میں کرائے گئے کاموں کے ٹینڈر نہیں ہیں نئے کام کے ٹینڈرز ہیں۔ 30اپریل کو ٹینڈر کھولیں گے انہوں نے کہا کہ جو ایم ڈی نے حکم دیا وہ کیا لیکن چونکہ یہ سروسز کا معاملہ ہے اس لئے الیکشن کمیشن کے رولز ایسے کاموں پر لاگو نہیں ہوتے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1