مقبوضہ کشمیرمیں لاپتہ افراد کے والدین کی تنظیم کا گمشدہ افراد بارے معلومات فراہم کر نے کا مطالبہ

مقبوضہ کشمیرمیں لاپتہ افراد کے والدین کی تنظیم کا گمشدہ افراد بارے معلومات ...

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں لاپتہ افراد کے والدین کی تنظیم ( اے پی ڈی پی) نے قابض انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ بھارتی فوجیوں اور پولیس اہلکاروں کے ہاتھوں گزشتہ چوبیس برسوں میں دوران حراست لاپتہ ہونے والے کشمیریوں کے بارے میں معلومات فرہم کرے۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق اے پی ڈی پی کے ارکان نے سرینگر میں احتجاجی مظاہرے کے دوران ہاتھوں میں گمشدہ افراد کی تصاویر اٹھا رکھی تھیں۔ انہوں نے قابض انتظامیہ کایہ دعویٰ مسترد کر دیا کہ شوکت احمد پال نامی ایک لاپتہ نوجوان عسکریت پسند وں کے فدائین سکوارڈ سے منسلک تھا اور یہ کہ اسے گزشتہ ماہ گرفتار کیا گیا تھا۔ اے پی ڈی کی رہنما پروینہ آہنگر نے اس موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ قابض انتظامیہ کے دعوے کے برعکس شوکت احمد پال کو 2003میں اغوا کے بعد لاپتہ کر دیا گیا تھا۔

 انہوںنے کہا کہ بھارتی فورسز اورحساس اداروں کی اس بات میں کوئی صداقت نہیں کہ وہ عسکریت پسند یا فدائی حملہ آور تھا ۔ پروینہ آہنگر نے کہا کہ بھارتی فورسز یہ بے بنیاد دعویٰ اپنا جرم چھپانے کے لیے کر رہی ہیں۔انہوںنے کہا کہ اے پی ڈی پی شوکت احمد کے معاملے کو جبری گمشدگیوں سے متعلق اقوام متحدہ کے ورکنگ گروپ کے ساتھ بھی اٹھائے گی اور اس سے گزارش کی جائے گی کہ معاملے کی تحقیقات کے لیے بھارت پر دباﺅ ڈالے۔ پروینہ آہنگر نے کہا کہ گمشدیوں سے متعلق اقوام متحدہ کے ورکنگ گروپ سے یہ گزارش بھی کی جائے گی کہ وہ جبری گمشدگیوں کی صورت حال کا جائزہ لینے کے لیے اپنی ایک ٹیم مقبوضہ کشمیر بھیجے ۔ شوکت احمد کے والد نے کہا کہ انکے بیٹے کو بھارتی فوج کی2راشٹریہ رائفلز کے میجرپرتاب سنگھ نے گرفتار کیا تھا۔

مزید : عالمی منظر