سپریم کورٹ کا تارکین وطن کو ووٹ کا حق دینے کیلیے قانون سازی اور آرڈیننس جاری کرنے حکم

سپریم کورٹ کا تارکین وطن کو ووٹ کا حق دینے کیلیے قانون سازی اور آرڈیننس جاری ...

                                     اسلام آباد(آن لائن) سپریم کورٹ نے تارکین وطن کو ووٹ کا حق دینے کیلئے قانون سازی اور آرڈیننس جلد جاری کرانے کا حکم دے دیا ۔ متعلقہ قوانین میں ترامیم کے لئے دس روز کے اندر اندر آرڈیننس جاری کیاجائے ۔ جبکہ الیکشن کمیشن کی طرف سے رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ نادرا سمیت تمام ادارے تارکین وطن کو ووٹ کا حق دینے کے لیے رضا مند ہیں تاہم اس کیلئے موثر قانون سازی کی ضرورت ہوگی ۔ ان خیالات کا اظہار ڈی جی الیکشن کمیشن شیر افگن نے چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں سماعت کرنے والے بینچ کے روبرو کیا ہے عدالت کا اظہار مسرت اور الیکشن کمیشن کے اقدامات پر اعتماد ۔ الیکشن کمیشن نے بتایا کہ ساڑھے چار لاکھ پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دیا جائے گا امریکہ ، برطانیہ سمیت دیگر ممالک میں موجود پاکستانی ووٹ ڈال سکیں گے ۔ ڈی جی الیکشن کمیشن نے عدالت کو بتایا کہ وزارت خزانہ نے انتخابی اخراجات کے لئے رقم مہیا کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے ۔ مشین ریڈایبل پاسپورٹ اور نائیکوپ کی ضرورت ہوگی تبھی سمندر پار پاکستانیز ووٹ کا حق استعمال کرسکیں گے سعودی عرب اور یو ای اے میں دس لاکھ پاکستانیوں کیلئے ایسا کچھ موجود ہیں نہیں وہ کیسے ووٹ دے سکیں گے اور یہ سہولت اتنے کم عرصے میں ہم انہیں دے سکیں گے ووٹ کی سہولت کے لیے مشین ریڈایبل پاسپورٹ اور نائیکوپ ضروری ہیں پیسے تو مل جائیں گے اخراجات بھی پورے ہوجائینگے لیکن یہ سہولیات کیسے دیں وزارت قانون کو قانون سازی کی سفارش کی ہے چیف جسٹس نے کہا کہ الیکشن کمیشن کے اقدامات قابل تعریف ہیں شیر افگن نے کہا کہ سفارتخانوں میں پولنگ سٹیشنز قائم کرنے کی اجازت نامے بھی درکار ہوں گے ۔ چیف جسٹس نے کہا کہ جو ملک کی ترقی کے لیے کام کررہے ہیں آپ کی معیشت کا پچاس فیصد حصہ باہر سے آتا ہے آپ انہیں ووٹ کا حق نہیں دینا چاہتے آپ کا تعاون ہو تو سب درست ہوسکتا ہے ہر کوئی کہہ رہا تھا کہ ایسا نہیں ہوسکتا چیئرمین نادرا نے ایک رات میں سافٹ ویئر تیار کر لیا ۔ افنان کریم کنڈی نے کہا کہ ہمیں جلد گرین سگنل دیا جائے گا ورنہ سب نامکمل ہوجائے گا ۔ شیر افگن نے کہا ووٹ ڈالنے کے لیے بھی اجازت نامے درکار ہوں گے اور بیرون ملک پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینے کیلئے عمل جلد مکمل کرلیا جائے گا ۔ شیر افگن نے کہا کہ سب عمل کو مکمل کرنے کیلئے مناسب وقت درکار ہوگا اتنی جلدی یہ سب کیسے ہوسکتاہے  ۔ چیف جسٹس نے کہا ک سب ادارے مل کر کام کریں تو بہت کچھ ممکن ہے الیکشن کمیشن اپنی تجویز وزیراعظم کو بھجوادے الیکشن کمیشن نے کہا کہ دس ملکوں میں ووٹ ڈالنے کے لیے ہر پولنگ سٹیشنوں کی ضرورت ہوگی چیف جسٹس نے کہا کہ خوشی ہے کہ تارکین وطن ووٹ ڈال سکیں گے الیکشن کمیشن اس پراسس کو جلد مکمل کرے اور وزارت قانون سے مل کر قانون سازی کرے الیکشن کمیشن اور دیگر متعلقہ ادارے عملی اقدامات کریں مزید سماعت دس روز کے بعد ہوگی ۔

سپریم کورٹ

مزید : صفحہ اول