الیکشن کمیشن نے سوئی گیس کے دونوں ایم ڈی ہٹانے کا حکم دے دیا

الیکشن کمیشن نے سوئی گیس کے دونوں ایم ڈی ہٹانے کا حکم دے دیا
الیکشن کمیشن نے سوئی گیس کے دونوں ایم ڈی ہٹانے کا حکم دے دیا

  

آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ایم ڈی سوئی سدرن اور نادرن کو ہٹانے کا حکم دیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ایم ڈیز انتخابات کے نتائج پر اثرانداز ہو سکتے ہیں جبکہ وزارت پیٹرولیم دونوں کو ایم ڈیز برقرار رکھنے کی کوششوں میں مصروف ہے۔ ڈان نیوز کے مطابق حکومت نے ایم ڈی سوئی سدرن اور ناردن کی مدمت ملازمت میں توسیع کی تھی لیکن الیکشن کمیشن نے دونوں ایم ڈیز کو ہٹانے کا حکم دے دیا ہے اور کہا ہے کہ دونوں ایم ڈیز انتخابات کے نتائج پر اثرانداز ہو سکتے ہیں لہٰذا انہیں تین دن میں ہٹا دیا جائے۔ یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ سوئی سدرن گیس کمپنی (ایس ایس جی سی) کے ایم ڈی ٓذوہیر احمد صدیقی سول ایوی ایشن سے نکالے جانے کے بعد پرویز مشرف کے دور میں سوئی گیس میں لائے گئے اور مشیر پٹرولیم ڈاکٹر عاصم کے قریبی ہونے کے باعث انہیں ایم ڈی بنایا گیا جبکہ ان کی عمر 60 سال سے زائد ہو چکی ہے۔ ذرائع کے مطابق سوئی سدرن کے ایم ڈی اور ڈاکٹر عاصم میں قربت کے ساتھ ساتھ کاروباری قربت بھی رہی ہے اور وہ امریکی شہریت بھی رکھتے ہیں جبکہ ان کے بچے امریکہ میں ہی زیر تعلیم ہیں۔ سوئی سدرن کے ایم ڈی کو پسند اور ناپسند کی بنیاد پر افسروں کے تبادلوں اور برطرفیوں کے الزامات کا بھی سامنا ہے اور ڈاکٹر سہتو سمیت کئی سابق ملازمین ان کے خلاف عدالتوں سے رجوع کرنے کے ساتھ ساتھ حکومتی ایوانوں کا دروازہ بھی کھٹکھٹا چکے ہیں مگر بااثر شخصیت ہونے کی وجہ سے ان پر کبھی آنچ نہیں آئی۔

مزید : بزنس /اہم خبریں