عالمی سطح پر ایک ایسے سعودی کیلئے اعلیٰ ترین ایوارڈ کا اعلان کہ سعودی عرب غصے سے آگ بگولا ہوگیا

عالمی سطح پر ایک ایسے سعودی کیلئے اعلیٰ ترین ایوارڈ کا اعلان کہ سعودی عرب غصے ...
عالمی سطح پر ایک ایسے سعودی کیلئے اعلیٰ ترین ایوارڈ کا اعلان کہ سعودی عرب غصے سے آگ بگولا ہوگیا

  


لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) انٹرنیٹ پر متنازعہ مواد شائع کرنے کے جرم میں 10 سال قید اور 1000 کوڑوں کی سزا پانے والے سعودی بلاگر رائف بداوی کو برطانیہ میں آزادی اظہار کے اعلٰی ترین ایوارڈ سے نواز دیا گیا ہے۔ یہ ایوارڈ ایسے افراد یا اداروں کو دیا جاتا ہے کہ جو آزادی اظہار کے تحفظ کے لئے خطرات مول لیتے ہیں، البتہ سعودی حکومت رائف بداوی کو سعودی معاشرے اور اقدار کے لئے خطرہ قرار دیتی ہے، اور ان کے غیر ملکی حمایتیوں سے بھی سخت نالاں نظر آتی ہے۔

’اپنی بیگم کو طلاق دے دو ‘ میاں بیوی کی مرضی کے بغیر سعودی جج نے 8 ماہ کی حاملہ خاتون کو زبردستی طلاق دلوادی کیونکہ۔۔۔ ایسا فیصلہ کہ ملک میں ہنگامہ برپا ہو گیا

اخبار دی گارڈین کے مطابق رائف بداوی کو 2012ءمیں سعودی مملکت کے خلاف تحریریں شائع کرنے پر گرفتار کیا گیا تھا۔ انہیں 2014ءمیں 10 سال قید اور 1000 کوڑوں کی سزا سنائی گئی تھی۔ انسانی حقوق کے عالمی اداروں کی طرف سے ان کی رہائی کے لئے مسلسل کوششیں جاری ہیں، لیکن تاحال وہ سعودی عرب میں قید ہیں۔ ان کے چار بچے اپنی والدہ کے ساتھ بیرون ملک مقیم ہیں۔ رائف بداوی کو دیا گیا ایوارڈ ان کی اہلیہ انصاف حیدر لندن جاکر وصول کریں گی۔ وہ اس سے پہلے انسانی حقوق کا ممتاز ایوارڈ یورپین سخاروف پرائز بھی حاصل کرچکے ہیں۔

اس سال ایوارڈ کے امیدواروں میں بنگلہ دیشی پبلشر احمد الراشد چوہدری بھی شامل تھے، جو شدت پسندوں کے حملے میں بال بال بچے تھے، جبکہ تھائی لینڈ اور ہانگ کانگ سے لاپتہ ہونے والے 5 پبلشر بھی شارٹ لسٹ کئے گئے امیدواروں کی فہرست میں شامل تھے۔ آزادی اظہار ایوارڈ ہر سال انٹرنیشنل پبلشر ایسوسی ایشن کی طرف سے دیا جاتا ہے۔

مزید : بین الاقوامی