تحقیقی مقالے پر اعزازیہ 10  سے بڑھا کر 60 ہزارکر دیا گیا

تحقیقی مقالے پر اعزازیہ 10  سے بڑھا کر 60 ہزارکر دیا گیا

  

لاہور(لیڈی رپورٹر)جی سی یونیورسٹی لاہور میں ایڈوانسڈ اسٹڈیز اینڈ ریسرچ بورڈ کا اجلاس۔تحقیق مقالہ جات کی اشاعت پر ملنے والے اعزازیہ میں خاطر خواہ اضافہ۔ہر مقالے کے امپیکٹ فیکٹر کی بنیاد پر اعزازیہ کا تعین کرنے کا بھی فیصلہ۔ انڈسٹری اور پرائیوٹ اداروں کے لیے اپنی لیبارٹریز/ٹیسٹنگ سہولیات کھولنے کی بھی سفار ش  ریسرچ بورڈ کا اجلاس چار روز تک جاری رہا،وائس چانسلر پروفیسر اصغر زیدی نے اجلاس کی صدارت کی،سنئیر فیکلٹی ممبران، ڈینز اور ڈائریکٹر ریسرچ ڈاکٹر فائزہ شریف کی بھی شرکت۔وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر اصغر زیدی کا کہنا تھا کہ لیبارٹریز صنعتوں کے لئے کھولنے سے انکے ساتھ مضبوط روابط پیدا ہونگے۔تحقیقی مقالے پر زیادہ سے زیادہ اعزازیہ 10 ہزار سے بڑھا کر 60 ہزار کر دیا گیا ہے، تاہم معیاری تحقیق کے فروغ کے لئے اعزازیہ کا تعین امپیکٹ فیکٹر کی بنیاد پر کیا جائے گا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ امپیکٹ فیکٹر جتنا زیادہ ہوگا، اعزازیہ بھی اسی تناسب سے زیادہ ہو گا،فیکلٹی اور عملے کو انفرادی طور پر کنسلٹنسی کی بھی اجازت دی ہے،کنسلٹنسی آمدن کا 20 فیصد حصہ یونیورسٹی کو ادا کرنا ہوگا۔انہوں نے بتایا کہ ریسرچ بورڈ کی سفارشات کا حتمی منظوری کے لیے اگلے ماہ سنڈیکیٹ کے سامنے رکھی جائیں گی۔ اجلاس میں پی ایچ ڈی ریسرچ اسٹڈیز کے لیے 50 میں سے 46 عنوانات اور مقالہ جات کی منظوری بھی دی گئی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -