ادائیگی معاملہ،شوگر ملز مالکان کیخلاف کارروائی شروع

ادائیگی معاملہ،شوگر ملز مالکان کیخلاف کارروائی شروع

  

نورپورنورنگا (نامہ نگار) کین کمشنر پنجاب میاں زمان وٹو نے بتایا کہ لاہور ہائیکورٹ کے تاندلیانوالہ شوگر ملز کیس میں فیصلہ کے خلاف اپیل کا عمل شروع کردیا ہے،انھوں نے بتایا کہ کچھ شوگر ملز کے خلاف ہمیں شکایت موصول ہوئی ہیں کہ وہ کاشتکاروں کو ان کے گنے کی قیمت کی ادائیگی بذریعہ بینک اکاونٹ ادا کرنے کی بجائے مہنگے داموں انہیں چینی فروخت کر رہی ہیں،جوشوگر فیکٹریز کنٹرول ایکٹ 1950کے تحت جرم ہے جو شکایات موصول ہوئی ہیں ان پر ملز مالکان کے خلاف ایکشن شروع کردیا گیا ہے،ان کا کہنا تھا کہ گنے کی قیمت کی ادائیگی کی بجائے جو چینی دی جارہی ہے وہoff-the-Bookپیدوار فروخت کی جارہی ہیں جس پر اس قسم کی ملیں (بقیہ نمبر24صفحہ6پر)

ٹیکس چوری کر رہی ہیں،جو ایک ٹن چینی پر اٹھارہ سے بیس ہزار روپے فی ٹن بنتا ہے،مزید ان کا کہنا تھاکہ یہ ہمارا ملک ہے جسے ہم نے ٹیکس دے کر ہی چلانا ہے،انھوں نے  کاشتکاروں سے گزارش کی کہ اس طرح چینی جن کو فروخت کی گئی ہے وہ کین کمشنر آفس کو ضرور آگاہ کریں،مزید ان کا کہنا تھا کہ مجھے اس بات کا بخوبی ادراک ہے کہ زیادہ تر ملوں نے کسانوں کی مکمل ادائیگیاں نہیں کیں،کسانوں کی فصلات کے اخراجات کی بابت اور ذاتی مالی مجبوریاں ہیں جن کی وجہ سے وہ شوگر ملز کے استحصال کا شکار ہورہئے ہیں،عدالت کے ایک حالیہ فیصلے سے کین کمشنر کے اختیارات پر کسانوں کی ادائیگیاں کروانے کے سلسلہ میں کچھ قدغنیں لگائی گئی ہیں،جس کی وجہ سے عدم ادائیگی کی صورت میں Criminal Proceedings فورا شروع نہیں کی جاسکتیں نتیجتا کچھ ملوں نے ادائیگی میں تاخیر شروع کر دی ہے،کین کمشنر نے کاشتکاروں سے اپیل کی کہ وہ کچھ دن انتظار کر لیں اور مہنگے داموں چینی نہ خریدیں،اگر کسی کسان کو پیمنٹ کی جگہ چینی فروخت کی گئی ہے تو وہ کین کمشنر آفس کو درج پتہ پر اطلاع ضرور دیں،تاکہ ان کی مکمل ادائیگی کروائی جاسکے۔

شروع

مزید :

ملتان صفحہ آخر -