نئی کابینہ کی تشکیل کیلئے مشاورت شروع، ن لیگ کے 12پی پی کے 7 وزیر شامل 

نئی کابینہ کی تشکیل کیلئے مشاورت شروع، ن لیگ کے 12پی پی کے 7 وزیر شامل 

  

        اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) شہباز شریف نے کابینہ کی تشکیل کے لیے اتحادیوں کے ساتھ مشاورت شروع کر دی۔ کابینہ میں مسلم لیگ ن کے 12وزراء اور پیپلز پارٹی کے 7 وزراء ہوں گے، ذرائع کا کہنا ہے کہ   جے یو آئی ف کو 4، ایم کیو ایم کو 2 اور بی این پی مینگل، اے این پی، جمہوری وطن پارٹی اور بلوچستان عوامی پارٹی کو ایک ایک وزارت دی جا ئے گی۔محسن داوڑ، اسلم بھوتانی اور طارق بشیر چیمہ کو بھی وفاقی کابینہ میں شامل کیے جانے کا امکان ہے۔   اسکے علاوہ خواجہ آصف، سعد رفیق، خرم دستگیر، احسن اقبال، مریم اورنگزیب، شائستہ پرویز ملک، رانا ثنا ئاللہ اور مرتضیٰ جا وید عبا سی کی بھی  کابینہ میں شمولیت کا امکان ہے۔ سینیٹ میں قائد ایوان کے لیے سینیٹر اعظم نذیر تارڑ کا نام زیر غور ہے۔ پیپلز  پارٹی سینیٹ سے شیری رحمان یا مصطفیٰ نواز کھوکھر میں سے ایک کو وزارت دے گی۔ بلاول بھٹو زرداری وزیر خارجہ، شازیہ مری کا نام بھی زیر غور ہے۔ جے یو آئی نے بلوچستان یا کے پی میں سے ایک گورنر کا عہدہ مانگ لیا۔  پنجاب کا گورنر پیپلز پارٹی اور سندھ کا گورنر ایم کیو ایم سے لیے جانے کا امکان ہے۔ ملک احمد خان، عطا تارڑ، حنیف عباسی کو مشیر بنائے جانے کا امکان ہے۔ سپیکر کے عہدے کے لیے خورشید شاہ اور نوید قمر کے نام پر غور ہیں۔ ڈپٹی سپیکر بی این پی یا بی اے پی سے لیا جائے گا۔دریں اثناوفاقی کابینہ میں شمولیت کے معاملہ  پر پیپلزپارٹی میں تقسیم پیدا ہو گئی۔ پیپلزپارٹی کے اکثر رہنما وزارتوں کے بغیر انتخابی اصلاحات کے حوالے سے وفاقی حکومت کی حمایت کے خواہاں ہیں۔  ذرائع  کا کہنا ہے کہ پیپلزپارٹی کے بعض رہنماؤں کی رائے ہے کہ  سیاسی استحکام کے لئے وفاقی کابینہ میں شامل ہونا چاہئیے۔  رہنماؤں کی رائے ہے کہ سیاسی استحکام کے لئے شمولیت ضروری، وفاقی کابینہ میں شمولیت نہ کی تو حکومت دو ماہ بھی چل نہ سکے گی۔ 

وفاقی کابینہ

مزید :

صفحہ اول -