"بطور سابق وزیر اعظم سفارتی پاسپورٹ نواز شریف کا حق ہے" احسن اقبال نے واضح کردیا

"بطور سابق وزیر اعظم سفارتی پاسپورٹ نواز شریف کا حق ہے" احسن اقبال نے واضح ...
سورس: Twitter

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال  کا کہنا ہے کہ بطور سابق وزیر اعظم سفارتی پاسپورٹ نواز شریف  کا حق ہے ، اس میں کوئی امتیازی سلوک نہیں ہے، سابق حکومت نے ان کے پاسپورٹ کی تجدید روکی ہوئی تھی۔ نواز شریف موجودہ حالات کی وجہ سے نہیں بلکہ ڈاکٹر کی ہدایت کے مطابق واپس آئیں گے، ڈاکٹرز جب بھی انہیں سفر کی اجازت دیں گے وہ پاکستان آئیں گے اور اپنے خلاف مقدمات کا سامنا کریں گے، یہ ان کا بنیادی حق ہے کہ قانون کے سامنے اپنے خلاف بنائے گئے جھوٹے مقدمات کا دفاع کریں اور انصاف حاصل کریں۔

نجی ٹی وی اے آر وائی نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ عمران نیازی پوری قوم کے سامنے ہاتھ اٹھا کر کہتا تھا کہ میں اللہ سے دعا کرتا ہوں کہ یہ میرے خلاف تحریک عدم اعتماد لے کر آئیں، جب وہ شکست کھانے لگے تو ایک دم انہیں امریکہ کی سازش نظر آنے لگی۔ اسی لیے کہتے ہیں کہ دعا اس ڈر سے مانگا کرو کہ یہ پوری بھی ہوسکتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ شفاف انداز میں خط کی تہہ تک پہنچا جائے گا، جو سازش عمران خان کو پتا لگ گئی تو اگر ایسی سازش ہماری مسلح افواج یا خفیہ ایجنسیوں کے علم میں ہوتی  تو کیا وہ اسے ریکارڈ پر نہ لاتے؟

تحریک انصاف کے تمام اسمبلیوں سے استعفوں کی صورت میں نئے انتخابات یا ضمنی الیکشن کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں احسن اقبال نے کہا کہ جب ہم یہ بات کرتے تھے تو تحریک انصاف ایک طرف اور پاکستان کی تمام سیاسی بڑی قوتیں ایک طرف کھڑی تھیں، آج صورت یہ ہے کہ تحریک انصاف اکیلی ایک طرف کھڑی ہے اور باقی تمام جماعتیں مخلوط حکومت کا حصہ ہیں، اگر اکیلی جماعت تحریک انصاف  استعفے دیتی ہے تو ضمنی الیکشن ہوسکتا ہے، انہیں امید ہے کہ تحریک انصاف کے تمام نمائندے استعفے نہیں دیں گے، ان کے نمائندے چاہیں گے کہ وہ قومی اور صوبائی اسمبلی میں اپنا کردار ادا کریں۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان اپنے فیصلوں پر نظر ثانی کریں ، اگر ہم آپس میں غداری کے فتوے بانٹیں گےتو یہ کیسی ریاست ہے کہ جس میں ہر کوئی وطن فروش ہے۔

مزید :

قومی -