طالبان کے اہم رکن ملا عبدالغنی کی رہائی کیلئے پاکستان اور افغانستان کے درمیان بات چیت

طالبان کے اہم رکن ملا عبدالغنی کی رہائی کیلئے پاکستان اور افغانستان کے ...

اسلام آباد/برلن (آئی این پی ) پاکستان اور افغانستان کے درمیان طالبان کے کلیدی رکن ملا عبدالغنی برادر کی رہائی کے معاملے پر بات چیت ہو رہی ہے۔ہفتہ کو جرمن نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق ایک سینئر سکیورٹی اہلکار نے بتایا کہ ابھی دونوں ملک ملا برادر کی رہائی کے سلسلے میں کسی بھی سمجھوتے پر نہیں پہنچے۔ اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر ا س نے کہا کہ ممکن ہے کہ پاکستان افغان حکام کو ملا برادر سے ملنے کی اجازت دے دے تاہم ابھی تک اس سلسلے میں کوئی باقاعدہ سمجھوتہ نہیں ہوا ہے۔ملا عبدالغنی برادر امریکی قیادت میں 2001 میں افغانستان پر ہونے والے اس حملے کے بعد سے گرفتار ہونے والی طالبان کی اہم ترین شخصیت ہیں جس کے نتیجے میں کابل میں اس افغان ملیشیا کا اقتدار ختم کر دیا گیا تھا۔ملا برادر کو طالبان کے بچ نکلنے والے قائد ملا محمد عمر کا قریبی اور قابل اعتماد ساتھی تصور کیا جاتا ہے۔ وزارت خارجہ کے ترجمان معظم احمد خان سے جب ملا برادر تک رسائی اور رہائی کے افغان مطالبات پر تبصرہ کرنے کو کہا گیا تو انہوں نے صحافیوں کو بتایا کہدونوں ملکوں کے درمیان قیدیوں کے معاملے پر بات چیت چل رہی ہے۔پاکستانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کسی قیدی کا نام لے کر ذکر نہیں کیا اور نہ ہی مزید کوئی تفصیلات بتائیں تاہم صحافیوں کے استفسار پر ا نہوں نے کہاکہ ملا برادر بدستور پاکستان میں زیر حراست ہے۔

مزید : صفحہ آخر