اوباما نے حقانی نیٹ ورک کو دہشتگرد کو قرار دینے کے بل پر دستخط کر دئیے

اوباما نے حقانی نیٹ ورک کو دہشتگرد کو قرار دینے کے بل پر دستخط کر دئیے

واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) امریکی صدر باراک اوباما نے ایوان نمائندگان اور سینیٹ کی طرف سے منظور شدہ اس بل پر دستخط کرکے اسے قانون بنا دیا جس کے تحت اب وزیرخارجہ کو طے کرنا ہوگا کہ کیا حقانی نیٹ ورک دہشت گرد تنظیم قرار دیئے جانے کے قانونی تقاضے پورے کرتا ہے۔ وزارت خارجہ نے اس نیٹ ورک کے بعض ارکان پر انفرادی طورپر کچھ پابندیاں عائد کی تھیں لیکن پوری تنظیم پر پابندی لگانے سے احتراز کیا تھا۔ اس قانون کے نفاذ سے حقانی نیٹ ورک کو دہشت گرد تنظیم قرار دینے کے سلسلے میں بنیادی قانونی تقاضا پوراہوگیا ہے۔ اسکے بعد ضروری کارروائی کرکے وزارت خارجہ حقانی نیٹ ورک کودہشت گرد قرار دینے کا سرکاری اعلان جاری کرے گی۔ وزیر خارجہ ہیلری کلنٹن قبل ازیں یہ کہہ چکی ہیں کہ حقانی نیٹ ورک کو دہشت گرد قرار دینے کا عمل جاری ہے۔ اس قانونی کارروائی کے مکمل ہونے سے امریکہ حقانی نیٹ ورک کے خلاف شکنجہ کس سکے گا جو اس وقت افغان جنگ میں اس کے لئے مسلسل درد سر بنا ہوا ہے کیونکہ اس کے کھاد سے تیار کردہ دستی بم ایساف اور افغان افواج کو زبردست نقصان پہنچا رہے ہیں۔ یاد رہے کہ موجودہ مہینے کے آغاز میں امریکی ملٹری اکیڈمی کے تحت کام کرنے والے تحقیقی ادارے سی ٹی سی نے اپنی رپورٹ میں الزام لگایا تھا کہ پاکستانی فوج حقانی نیٹ ورک کو مالی امداد دیتی ہے اور اسے ضروری سازو سامان بھی فراہم کرتی ہے۔ رپورٹ کے مطابق پاکستان نے ہمیشہ حقانی نیٹ ورک کے خلاف آپریشن کرنے کے سلسلے میں امریکی دباﺅ کی مزاحمت کی ہے۔

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...