عراقی وزیراعظم کے وفادار شعیہ جنگجو اور سکیورٹی فورسز قوت کے مظاہرے کے لیے سامنے آ گئے

عراقی وزیراعظم کے وفادار شعیہ جنگجو اور سکیورٹی فورسز قوت کے مظاہرے کے لیے ...

                             بغداد (این این آئی)عراقی وزیر اعظم نوری المالکی کے وفادار شیعہ جنگجو اور سکیورٹی فورسز دارالحکومت بغداد میں اپنی قوت کے مظاہرے کےلئے سامنے آگئے ہیں۔پنے ٹی وی خطاب میں نوری المالکی نے کہا کہ وہ صدر معصوم کو آئین کی خلاف ورزی کے لیے عدالت میں لے جانے کا ارادہ رکھتے ہیں۔نوری المالکی نے کہا کہ صدر معصوم سب سے بڑے اتحادی کو وزیراعظم نامزد کرنے کی دعوت نہ دے سکے اور اس کی ڈیڈ لائن ختم ہو چکی ہے۔انھوں نے کہا کہ یہ رویہ ایک ایسے ملک میں جہاں جمہوری اور وفاقی طور پر حکومت کی جاتی ہے وہاں آئین اور سیاسی پراسس کے خلاف بغاوت کی نمائندگی کرتا ہے۔انھوں نے کہاکہ صدر کی جانب سے آئین کی دانستہ خلاف ورزی کے یکجہتی، خودمختاری اور عراق کی آزادی اور سیاسی پراسس کے تاریک سرنگ میں چلے جانے پر سنگین نتائج مرتب ہوں گے۔خطاب کے فورا بعد نوری مالکی کے وفادار شیعہ جنگجو اور عراقی فوجی شہر کے مختلف مقامات پر نظر آنے لگے بہر حال کسی قسم کے تشدد کی کوئی خبر نہیں ملی نوری المالکی کے ناقدین نے بتایا کہ نوری مالکی جو شیعہ فرقہ سے تعلق رکھتے ہیں انھوں نے فرقہ وارانہ پالیسیوں سے موجودہ بحران کو بڑھا دیا اور ان سے سنیوں اور کردوں یہاں تک شیعوں کی جانب سے بھی عہدہ چھوڑنے کی مانگ ہو رہی ہے دوسری جانب مغربی ممالک کی جانب سے بھی عراقی رہنماو¿ں پر ایک ایسی حکومت بنانے پر زور دیا جا رہا ہے جس میں تمام فرقوں اور طبقوں کی نمائندگی ہو۔

مزید : عالمی منظر