مجید نظامی محروم کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے نظریہ پاکستان ٹرسٹ میں تقریب

مجید نظامی محروم کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے نظریہ پاکستان ٹرسٹ میں تقریب

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)ڈاکٹر مجید نظامیؒ نے زندگی بھر کلمہ¿ حق بلند کیا آپ اپنی ذات میں ایک تحریک تھے، آج وہ جسمانی طور پر ہم میں موجود نہیں لیکن اپنے افکارونظریات کی بدولت ہمیشہ زندہ رہیں گے ڈاکٹر مجید نظامیؒ اپنی ذات میں ایک تحریک تھے آپ نے اپنی زندگی نظریہ¿ پاکستان کیلئے وقف کررکھی تھی آپ نے ہمیشہ خواتین کی حوصلہ افزائی کی ان خیالات کااظہار مقررین نے ایوان کارکنان تحریک پاکستان میں تحریک پاکستان کے سرگرم کارکن ، ممتاز صحافی اور چیئرمین نظریہ¿ پاکستان ٹرسٹ ڈاکٹر مجید نظامیؒ کی وفات پر اظہار تعزیت کرنے اور ان کی حیات و خدمات کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے منعقدہ تعزیتی ریفرنس کے دوران کیا اس تعزیتی ریفرنس کا اہتمام نظریہ¿ پاکستان ٹرسٹ شعبہ¿ خواتین نے کیا تھا اس موقع پر نظریہ¿ پاکستان ٹرسٹ شعبہ¿ خواتین کی کنوینر بیگم مہناز رفیع، جسٹس (ر) ناصرہ جاوید اقبال،ڈاکٹر فرزانہ نذیر، ڈاکٹر راشدہ قریشی، پروفیسر شہناز ستار،انیلہ حسن، بیگم حامد رانا، نائلہ عمر، ڈاکٹر فاخرہ،شاہدہ حنیف، اساتذہ¿ کرام سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی خواتین کی کثیر تعداد موجود تھی پروگرام کا باقاعدہ آغاز تلاوت کلام پاک، نعت رسول مقبول اور قومی ترانہ سے ہوا۔پروگرام کی نظامت کے فرائض کنونیئر مادرملت سنٹرؒ پروفیسر ڈاکٹر پروین خان نے انجام دئیے۔

بیگم مہناز رفیع نے کہا کہ ڈاکٹر مجید نظامیؒ نظریاتی صحافت کے سالاراور نظریہ¿ پاکستان کے بہت بڑے علمبردار تھے،آپ ایک کھرے انسان اور صحیح العقیدہ مسلمان تھے۔آپ کے قول و فعل میں کوئی تضاد نہیں تھا۔آپ پاکستان کو قائداعظمؒ ،علامہ محمد اقبالؒ اور مادرملتؒ کے نظریات وتصورات کے عین مطابق ایک جدید اسلامی فلاحی جمہوری مملکت بنانے کیلئے ہمیشہ کوشاں رہے۔ڈاکٹر مجید نظامیؒ آزادی¿ صحافت کے علمبردار تھے اور اس کی پاداش میں آپ نے بہت قربانیاں دیں۔ایوب خان کیخلاف صدارتی انتخاب میں نوائے وقت اور ڈاکٹر مجید نظامیؒ نے محترمہ فاطمہ جناح ؒ کا بھرپور ساتھ دیا اور انہیں مارملت کا خطاب بھی دیا۔آپ نے زندگی بھر کلمہ¿ حق بلند کیااور حکمرانوں کے ہر غلط قدم پر تنقید کی ۔جسٹس(ر)ناصرہ جاوید اقبال نے کہا کہ ڈاکٹر مجید نظامیؒ کی روح آج بھی ہمارے درمیان موجود ہے۔اچھے کردار کی تمام خصوصیات ان میں موجود تھیں۔ڈاکٹر مجید نظامیؒ نے ہمیشہ خواتین کی حوصلہ افزائی کی ۔انہوں نے کہا کہ آج بغاوت کی باتیں کرنیوالے پاکستان کے دشمن اور غدار ہیں ،ایسی باتیں کرنیوالے جہاں سے آئے ہیں وہیں واپس چلے جائیں۔انہوں نے خواتین کو ڈھال بنارکھا ہے جبکہ بلٹ پروف جیکٹیں پہن کر شہادت کی آرزو کی جارہی ہے۔انہوں نے کہا پنجاب میں خواتین پر گھریلو تشدد کے خاتمے کا بل منظور کیا جائے۔پرنسپل شالامار کالج پروفیسر شہناز ستار نے کہا کہ ڈاکٹر مجید نظامیؒ اپنی ذات میں ایک تحریک تھے۔آج وہ جسمانی طور پر ہم میں موجود نہیں لیکن اپنے افکارونظریات کی بدولت ہمیشہ زندہ رہیں گے۔ان جیسے افراد صدیوں بعد پیدا ہوتے ہیں۔ڈاکٹر مجید نظامیؒ نے نئی نسل کی نظریاتی تعلیم و تربیت کا اہتمام کر کے ایک اہم قومی فریضہ سر انجام دیا ۔ہم ان کے مشن کو آگے بڑھائیں گے۔ممبر صوبائی اسمبلی ڈاکٹر فرزانہ نذیر نے کہا کہ ڈاکٹر مجید نظامیؒ ایک عظیم انسان تھے۔آپ نے نظریہ¿ پاکستان کو زندہ¿ جاوید رکھا۔آپ کی وفات پر پوری قوم سوگوار تھی۔آپ نے کارکنان تحریک پاکستان کی فلاح و بہبود کیلئے متعدد عملی اقدامات کیے۔ڈاکٹر مجید نظامیؒ کا لیلة القدر کی مبارک رات میں انتقال ہوا جو بڑی خوش قسمتی کی بات ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...