اسرائیلی درندگی کے خاتمے کیلئے امت پر جہاد فرض ہو چکا جماعةالدعوة

اسرائیلی درندگی کے خاتمے کیلئے امت پر جہاد فرض ہو چکا جماعةالدعوة

                                  لاہور ( این این آئی) جماعةالدعوة پاکستان کے رہنماﺅں نے کہا ہے کہ آج بیت المقدس اور مظلوم فلسطینی مسلمان امت مسلمہ کو مدد کے لئے پکار رہے ہیں،مصائب اور مشکلات سے دوچار اپنے مظلوم بھائیوں کی مدد کرنا ہم سب پر فرض ہے، اسرائیلی فوج امریکہ اور اس کے اتحادیوں کی سرپرستی میں نہتے فلسطینیوں کی نسل کشی کر رہی ہے، غزہ کو کھنڈر بنا کر رکھ دیا گیا ہے، فاسفورس بموںاور کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال سے معصوم فلسطینیوں کی لاشیں مسخ ہو کر رہ گئی ہیں مگر اقوام متحدہ، سلامتی کونسل اور دیگر نام نہاد عالمی ادارے بدترین جنگی جرائم پر خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں بلکہ اسرائیل کو شہ دی جارہی ہے۔اپنے ایک مشترکہ بیان میں جماعةالدعوة سیاسی امو رکے سربراہ پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی، مولانا امیر حمزہ، مولانا سیف اللہ خالد، قاری محمد یعقوب شیخ اور حافظ خالد ولید نے کہاکہ اسرائیلیوں کو امریکہ و یورپ کی مکمل مددوحمایت حاصل ہے۔ عالم اسلام میں اس وقت زبردست خاموشی ہے۔ مسلم حکمران محض مذمتی بیانات سے کام لے رہے ہیں۔فلسطینی مسلمانوں کو ظلم سے نجات دلانے اور اسرائیلی درندگی کے خاتمے کے لئے ساری امت پر جہاد فرض ہو چکا ہے ۔ مظلوم فلسطینیوں کی آواز پر لبیک کہتے ہوئے اپنا جان و مال سب کچھ قربان کرنے کو تیار ہیں۔اقوام متحدہ اور او آئی سی سمیت سب عالمی ادارے ناکام ہو چکے۔ نواز شریف قائد اعظم کے وارث ہونے کا کردار ادا کریں‘سعودی عرب کو ساتھ ملاکر اسلامی سربراہی کانفرنس طلب کریں اوراسرائیل کو ڈیڈ لائن دیں کہ وہ غزہ کی ناکہ بندی ختم کرے وگرنہ وہ اسر ائیل کو جڑ سے اکھاڑ پھینکیںگے۔ مسلم ممالک اپنی عدالت انصاف ،تجارتی منڈیاں،اسلامی یونین بنائیںاور مشترکہ دفاعی نظام تشکیل دیں۔ انہوںنے کہاکہ یہ ملک لاالہ الااللہ کے نام پر بنا تھا اور اسکا ایٹم بم اسلام کی جاگیر ہے۔

جماعةالدعوة

 

مزید : صفحہ آخر