سیاسی کشمکش ، ڈالر پر سٹہ بازی شروع ،مارکیٹ میں قلت، قیمت میں اضافہ

سیاسی کشمکش ، ڈالر پر سٹہ بازی شروع ،مارکیٹ میں قلت، قیمت میں اضافہ

لاہور(صبغت اللہ چودھری)ملکی سرمایہ کاروں نے ملک میں جاری سیاسی کشمکش کے موقع کا فائدہ اٹھانے کے لئے ڈالر پر بڑے پیمانے پر سٹہ بازی شروع کر دی ۔ گزشتہ روز اوپن مارکیٹ میں اربوں روپے مالیت کے ڈالر کی خریدی کی گئی جس سے اوپن مارکیٹ میں نہ صرف ڈالر کی قلت پیدا ہو گئی بلکہ قیمت میں بھی اضافہ ہو گیا ۔ فاریکس مارکیٹ کے ذرائع کے مطابق ملک میں جاری سیاسی کشمکش سے روپے کی قدر میں یقینی دباﺅ کے بعد ڈالر کی قیمت میں اضافہ متوقع ہے دوسری جانب ملک سٹاک مارکیٹ کا بھٹہ بیٹھ جانے کے بعد مارکیٹ سے نکالے جانے والے سرمایہ کی سرمایہ کاری بھی فاریکس مارکیٹ میں متوقع ہے ان دونوں وجوہات کے باعث حکومت کے ہر ممکن اقدامات کے باوجود ڈالر کی قیمت میں اضافہ متوقع ہے جس کا فائدہ اٹھانے کے لئے سرمایہ کار میدان میں آ گئے ہیں ۔ گزشتہ روز صبح سے ہی اوپن مارکیٹ میں بڑے پیمانے پر ڈالر کی خریداری شروع ہو گئی جس کے باعث ڈالر کی قیمت میں بتدریج اضافہ ہونا شروع ہو گیا شام تک ڈالر کی قیمت میں 55 پیسے کا اضافہ دیکھنے میں آیا شام تک اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت خرید 98.40 روپے سے بڑھ کر 98.95 روپے اور قیمت فروخت 98.65 روپے سے بڑھ کر 99.20 روپے تک پہنچ گئی ۔ مارکیٹ ذرائع کے مطابق آج ڈالر کی قیمت ایک سو روپے تک پہنچ جانے کی توقع ہے ۔ سٹاک مارکیٹ سے گزشتہ روز نکلنے والے اربوں روپے کی سرمایہ بھی آج فاریکس مارکیٹ میں متوقع ہے ۔فاریکس بروکرز فہیم خان اور محمد ارشد کے مطابق گزشتہ روز ڈالر میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری دیکھنے میں آئی ہے ۔ حکومت کی جانب سے تین ماہ قبل ڈالر کی قیمت کو کنٹرول کئے جانے کے بعد سے فاریکس مارکیٹ میں ڈالر پر نمایاں سرمایہ کاری نہیں ہو رہی تھی لیکن گزشتہ روز سے سرمایہ کاری شروع ہو گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سرمایہ کاروں کو توقع ہے کہ ملک میں جاری سیاسی کشمکش کے باعث ڈالر کی قیمت 101 سے 102 روپے تک ہو جائے گی ۔

مزید : صفحہ اول