سیا لکوٹ ،بھارتی فوج کی بلا اشتعال فائرنگ ،خاتون جاں بحق ،4افراد زخمی

سیا لکوٹ ،بھارتی فوج کی بلا اشتعال فائرنگ ،خاتون جاں بحق ،4افراد زخمی

                                                سیالکوٹ/نئی دہلی/اسلام آباد(بیورو رپورٹ ،اے این این) بھارت کی احسان فراموشی جاری،گرفتار فوجی کی رہائی کے بعد ورکنگ باو¿نڈری پر ایک بار پھر بلا اشتعال فائرنگ،خاتون جاں بحق،4افراد زخمی،متعدد مویشی ہلاک،بھارتی فائرنگ سے کئی مکانات اور ایک مسجد کو بھی نقصان پہنچا،پاک فوج کی جوابی کارروائی،دشمن کی توپیں خاموش،اہلکار زخمی ،7چیک پوسٹیں تباہ ہو گئیں،علاقہ مکینوں میں خوف و ہراس پھیل گیا،ادھر اسلام آباد میں بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کو وزارت خارجہ طلب کرکے سرحدی خلاف ورزی پراحتجاج کیاگیاہے ۔تفصیلات کے مطابق بھارت نے اپنے گرفتار فوجی کی رہائی کے بعد ایک بار پھر احسان فرامومشی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کنٹرول لائن کے بعد سیالکوٹ سے ملحقہ ورکنگ باو¿نڈری پر بلا اشتعال فائرنگ کی ہے۔بھارت نے جروال اور چاروہ سیکٹرز میں سول آبادی کو بھاری توبخانے سے نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں چاروہ سیکٹر میں ایک مکان پر گولہ گرنے سے خاتون جاں بحق ہو گئی جبکہ دونوں سیکٹرز میں متعدد مکانات کو نقصان پہنچا اور مزید چار افراد زخمی ہوگئے۔بھارتی گولہ باری سے متعدد مویشی بھی ہلاک اور زخمی ہو ئے ایک مسجد کو شدید نقصان پہنچا۔زخمی ہونے والے افراد کو مقامی ہسپتال میں منتقل کر دیا گیا ہے۔جاں بحق ہونے والی خاتون کا تعلق گاو¿ں کھوکھر شہبا سے تھا۔بھارتی فائرنگ کا چناب رینجز نے بھر پور جواب دیا جس کے باعث دشمن کی توپیں خاموش ہو گئیں تاہم دشمن کا کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔دوطرفہ فائرنگ کا تبادلہ کافی وقت تک جاری رہا جس کے باعث علاقہ مکینوں میں خوف و ہراس پھیل گیا۔دوسری جانب بھارت کے دفاعی ترجمان لیفٹیننٹ جنرل منیش مہتا نے ایک بار پھر روایتی ہٹ دھرمی اور الزام تراشی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ فائرنگ میں پہل پاکستان کی جانب سے کی گئی۔پاک فوج نے سرحدی چوکیوں کو نشنانہ بنایا۔بھارتی دفاعی ترجمان کے مطابق پاکستان رینجرز نے چھوٹے اور خود کار ہتھیاروں سے ارنیا سب سیکٹر میں بھارت کی سرحدی چوکیوںکو نشانہ بنایاجس کے نتیجے میں بی ایس ایف کے دوجوان معمولی زخمی ہوئے ہیں جنہیں علاج کیلئے ہسپتال میں داخل کردیاگیاہے ۔فائرنگ کا یہ واقعہ صبح 6بجے سے ساڑھے 8بجے تک جاری رہا۔پاک فوج کی فائرنگ سے نکووال اور بدھروامیں سرحدی پوسٹوں کو نقصان پہنچا۔پاک فوج نے پٹال ¾پنڈی چارکان ¾کاکے دے کوٹھے اور چناز میں بھی سرحدی پوسٹوں کو نشانہ بنایا۔پاکستان کی جانب سے ہلکے اور خود کار ہتھیاروں کا استعمال کیاگیا۔واضح رہے کہ دوروز قبل پاکستان نے دریائے چناب عبور کرکے اپنی حدود میں داخل ہونے والے بھارتی فوجیوں کو گرفتاری کے بعد بھارت کی درخواست پر رہا کردیاتھاجس کے بعد بھارت نے پہلے پونچھ سیکٹر میں کنٹرول لائن پر دوبار فائرنگ کی جس کے بعد سیالکوٹ میں ورکنگ باﺅنڈری پر سول آبادی کو نشانہ بنایاگیا۔ دریں اثناءپاکستان میں سیالکوٹ سیکٹر میں بھارت کی جانب سے بلا اشتعال فائرنگ اور ایک خاتون شہری جاں بحق اورتین کے زخمی ہونے پر شدید احتجاج کیا گیا۔ پاکستان میں تعینات بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کو وزارت خارجہ نے طلب کرکے احتجاجی مراسلہ دیا گیا ہے۔ وزارت خارجہ نے بھارت پر واضح کیا کہ ایسے وقت میں جب دونوں ملکوں کی قیادت باہمی تعلقات کو بہتر بنانے کیلئے کوشاں ہے اور مقصد کیلئے پاکستان اور بھارت کے درمیان سیکرٹری خارجہ سطح کے مذاکرات بھی ہونے جارہے ہیں، اس قسم کے بدقسمت واقعات تعلقات کی بہتری کیلئے کی جانے والی کوششوں کیلئے نقصان دہ ہیں۔ بیان میں کہا گیا کہ بھارت کی جانب سے جولائی سے اب تک سیز فائر کی خلاف ورزی کا یہ 54 واں واقعہ ہے۔

مزید : صفحہ اول