آرٹیکل 245 کیس، خوش ہونا چاہئے کہ فوج حکومت کے کہنے پر آئی:اسلام آباد ہائیکورٹ

آرٹیکل 245 کیس، خوش ہونا چاہئے کہ فوج حکومت کے کہنے پر آئی:اسلام آباد ہائیکورٹ
آرٹیکل 245 کیس، خوش ہونا چاہئے کہ فوج حکومت کے کہنے پر آئی:اسلام آباد ہائیکورٹ

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )اسلام آباد ہائیکورٹ نے وفاقی دارالحکومت میں دفعہ245  کے نفاذ کیخلاف دائر درخواست کی سماعت کے دوران جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دیئے کہ درخواست گزار کو خوش ہونا چاہئے کہ فوج سول حکومت کے کہنے پر آئی ہے ، کیس میں 6 سینئر وکلاءعدالتی معاون مقرر کر دیئے گئے ہیں ۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں آرٹیکل 245 کیخلاف دائر درخواست پر چیف جسٹس انور خان کاسی کی سربراہی میں لارجر بینچ نے سماعت کی۔ درخواست گزار کا موقف کا تھا کہ وفاقی دارالحکومت میں دفعہ245 کی وجہ سے بنیادی انسانی حقوق معطل ہو گئے ہیں۔ جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دیئے کہ درخواست گزار کو خوش ہونا چاہئے کہ فوج سول حکومت کے کہنے پر آئی ہے۔ چیف جسٹس انور خان کاسی نے کہا کہ 245 کا نفاذ برائے نام رہ گیا ہے ، آپ نے اس میں سے ہوا نکال دی ہے۔ عدالت نے 6 سینئر وکلاءکو عدالتی معاون مقرر کر دیا ہے جن میں عبدالحفیظ پیرزادہ ، ایس ایم ظفر ، خالد انور ، توفیق آصف ، رضا ربانی اور حامد خان عدالتی معاونت کرینگے۔ عدالت نے وزارت دفاع سے جواب طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت ستمبر کے پہلے ہفتے تک ملتوی کر دی۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...