ایمنسٹی انٹرنیشنل نے امریکی جنگی جرائم کا پردہ چاک کر دیا

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے امریکی جنگی جرائم کا پردہ چاک کر دیا
ایمنسٹی انٹرنیشنل نے امریکی جنگی جرائم کا پردہ چاک کر دیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کابل(نیوز ڈیسک) انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم ایمنیسٹی انٹرنیشنل نے اپنی تازہ رپورٹ میں انکشاف کیا ہے افغانستان میں امریکی فوجیں نہ صرف گھناﺅنے جنگی جرائم میں ملوث ہیں بلکہ ان جرائم کی پردہ پوشی کی بھی حکومتی سطح پر کوششیں کی گئی ہیں۔ادارے کا کہنا ہے کہ امریکی فوج لوگوں کے اغواء، ہلاکتوں اور غیر قانونی تشدد میں ملوث ہے اور امریکی خفیہ ایجنسی سی آئی اے بھی اسی طرح کے جرائم میں ملوث ہیں۔رپورٹ میں ایک افغان شہری محمد طاہرکی رونگٹھے کھڑے کر دینے والی داستان کا بھی ذکر ہے ۔ محمد طاہر نے بتایا کہ اس کی سات ماہ کی حاملہ بیٹی اس کے سامنے دم توڑ رہی تھی اور اس سے کچھ کہنے کے لئے تڑپ رہی تھی مگر امریکی فوجیوں نے اسے اس کے قریب نہ جانے دیا اور اسے اپنی بیٹی کی آخری سسکیوں کو دور سے سنے پر مجبور کر دیا ۔ اس نے بتایا کہ اس کے گھر میں امریکی فوج نے دو حاملہ خواتین اور ایک نو عمر لڑکی کو قتل کیا اور آج تک اس جرم پر تحقیقات کا آغاز نہیں ہوا ۔

”Left in the dark“ کے نام سے شائع ہونے والی رپورٹ میں ایسے ہی دس اور واقعات کا ذکر کیا گیا ہے جن میں 140افراد کو امریکیوں نے ہلاک کیا ۔ اور پھر امریکیوں کی ملی بھگت سے ان کی مکمل پردہ پوشی کی گئی ۔واضح رہے کہ امریکی پینٹا گون نے ان الزامات کی کوئی تردید نہیں کی۔

مزید : بین الاقوامی