بجٹ خسارے اور سماجی عدم مساوات میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے:خرم سعید

بجٹ خسارے اور سماجی عدم مساوات میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے:خرم سعید

  

کراچی (اکنامک رپورٹر)بزنس مین پینل کے مرکزی رہنما اورایف پی سی سی آئی کے سابق نائب صدرخرم سعیدنے کہا ہے کہ برآمدات کی کمی سے بجٹ خسارے اور سماجی عدم مساوات میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے جو ملکی مستقبل کیلئے خطرہ ہے۔پاکستان قرضوں کے بل پر زرمبادلہ کے ذخائر اور روپے کی قدر کوہمیشہ کیلئے مستحکم نہیں رکھ سکتا اسلئے برامدات کے شعبہ میں انقلابی تبدیلیاں لانی ہونگی۔ملکی وسائل سے امراء فائدہ اٹھا رہے ہیں جبکہ غریبوں کو نظر انداز کیا جا رہا ہے۔ ملک کی معاشی صورتحال اتنی بہتر نہیں جتنی میڈیا مینجمنٹ کے ذریعے بتائی جا رہی ہے۔خرم سعید نے کاروباری برادری سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ سترہ سال سے پاکستان میں مردم شماری نہ ہونے کے سبب معیشت ، جی ڈی پی اور آبادی کے متعلق اعداد و شمار اندازوں پر مبنی ہیں ۔

پالیسی ساز ساری منصوبہ بندی بھی اندازوں پر کر رہے ہیں جسکا نتیجہ سب کے سامنے ہے۔معاشرے کے مختلف طبقات میں دولت کی تقسیم اورسماجی تفاوت کے متعلق دعوے بھی اندازے ہیں جبکہ حقیقت کچھ اور ہے۔ برامدات کی تشویشناک صورتحال سے نہ صرف غربت بڑھ رہی ہے بلکہ صحت، تعلیم اور دیگر تمام شعبوں پر بھی منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں جس سے عوام کی بے چینی میں اضافہ ہو رہا ہے۔ اپر مڈل کلاس اور امیر صحت اور تعلیم کے شعبوں کے غیر فعال ہونے پر نجی شعبہ کی خدمات حاصل کر لیتے ہیں مگر سفید پوش اور غریب اس عیاشی کے متحمل نہیں ہو سکتے۔دنیا اور پاکستان کی تاریخ سے پتہ چلتا ہے کہ غریب ہمیشہ تبدیلی کا انتظار نہیں کرتے بلکہ اٹھ کھڑے ہوتے ہیں۔قیام پاکستان بھی عوام کے اس وقت کے نظام کو قبول نہ کرنے کا نتیجہ تھا۔ عوام کو سماجی، سیاسی اور اقتصادی انصاف کا نہ ملنا ملک کے مستقبل کیلئے خطرناک ہے اور اس کا سب سے آسان حل برامدات میں اضافہ اورمنصفانہ ٹیکس سسٹم ہے جو تمام ٹیکس گزاروں کے مفادات کے مطابق ہو ورنہ سیاسی و اقتصادی استحکام کا حصول نا ممکن ہو گا۔خرم سعید نے کہا کہ ایکسپورٹ مینیجرز کی تمام تر توجہ اپنی ذمہ داری نبھانے کے بجائے سیاست پر ہے جس پر انکی گوشمالی کی جائے اور کارکردگی بہتر نہ ہونے پر دروازہ دکھا دیا جائے۔

مزید :

کامرس -