پاکستان ویتنام سے چائے درآمد کرنے والا سب سے بڑا ملک بن گیا

پاکستان ویتنام سے چائے درآمد کرنے والا سب سے بڑا ملک بن گیا

  

کراچی (اکنامک رپورٹر) کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری صدر افتخار احمد وہرہ نے کہا ہے کہ پاکستان اور ویتنام کے درمیان باہمی تجارتی تعلقات میں حالیہ برسوں میں کافی حد تک بہتری آئی ہے جبکہ پاکستان ویتنام سے چائے درآمد کرنے والا سب سے بڑا ملک ہے۔مالی سال 2015کے دوران پاکستان نے ویتنام کو222.92 ملین ڈالر مالیت کی اشیاء برآمد کیں جبکہ گزشتہ سال206.54 ملین ڈالر مالیت کی اشیاء درآمد کی گئیں۔ویتنام سے پاکستان کی درآمدات 122.5 ملین ڈالر مالیت تک پہنچ گئی ہے جومالی سال 2013میں 94.01 ملین ڈالر تھیں اس طر ح درآمدات میں بھی30فیصد کااضافہ دیکھا گیا۔وہ ویتنام کے سفیرنگوین شوان لو کے دورہ کراچی چیمبر کے موقع پر منعقدہ اجلاس سے خطاب کر رہے تھے ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان اور ویتنام کے درمیان باہمی تعاون کو فروغ دینے کی وسیع گنجائش موجود ہے خاص طور پر سرمایہ کاری اور تجارت کے لحاظ سے آئی ٹی،سافٹ ویئر صنعت، زراعت،ثقافت وتعلیم قابل ذکر ہیں۔ دونوں ملکوں کے تجارتی حکام نے باہمی تجارت میں اضافے کے لیے چند سالوں کے دوران کئی اقدامات عمل میں لائے۔

تاہم مزید اقدامات عمل میں لانے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے ویتنام کے چیمبرآف کامرس اینڈ انڈسٹری اور کراچی چیمبر کے درمیان ایم او یو پر دستخط کرنے کا مشورہ دیا جس کا مقصد دونوں ملکوں کی تاجربرادری کو ہر ممکن سہولیات فراہم کرنااور تجارت سے متعلق معلومات کاتبادلہ کرناہو۔انہوں نے ویتنام کے تاجروں کو کراچی چیمبر کے زیر اہتمام ہر سال منعقد ہونے والی’’مائی کراچی‘‘نمائش میں شرکت کی دعوت دیتے ہوئے کہاکہ یہ نمائش نہ صرف ویتنام کے تاجرو صنعتکاروں کو اپنی مصنوعات کی تشہیر و فروخت کے بہترین مواقع فراہم کرے گی بلکہ خوشگوار ماحول میں کراچی کے تاجربرادری کے ساتھ مضبوط روابط استوار کرنے اور بزنس ٹو بزنس میٹنگز کے مواقع بھی میسر آئیں گے۔اس موقع پر کے سی سی آئی کے سینئرنائب صدر محمد ابراہیم کوسمبی نے اس موقع پر ویتنام کے سفیر کے دورے کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہاکہ کراچی چیمبر میں ویتنام کے اعلیٰ سطح وفد کے ساتھ بزنس ٹو بزنس میٹنگ سے یقینی طور پردونوں ملکوں کے درمیان باہمی تجارت کے حجم میں اضافہ ہو گا۔ویتنام پاکستانی مصنوعات اور خام مال کے لیے ایک امید افزا مارکیٹ ہے جبکہ ویتنام کی تاجربرادری بھی پاکستان کے بے پناہ قدرتی وسائل اور ٹیلنٹ سے فائدہ اٹھاسکتے ہیں جبکہ چائنا پاکستان اقتصادی راہدری کے منصوبے کے قیام سے غیر ملکی سریہ کاروں کے لیے پاکستان میں محفوظ سرمایہ کاری کے وسیع مواقع میسر آئیں گے نیز پاکستان کے بہتر ہوتے امیج اور ماحول سے بھی ویتنام کے تاجروں کو فوائد حاصل ہوں گے۔

مزید :

کامرس -