کمرشل امپورٹرز نے انڈینٹرز پر 14فیصد سیلز ٹیکس کے نفاذ کو مسترد کردیا

کمرشل امپورٹرز نے انڈینٹرز پر 14فیصد سیلز ٹیکس کے نفاذ کو مسترد کردیا

  

کراچی (اکنامک رپورٹر)پاکستان کیمیکلز اینڈ ڈائز مرچنٹس ایسوسی ایشن (پی سی ڈی ایم اے) نے سندھ حکومت کی جانب سے انڈینٹرز کی خدمات پر14فیصد سیلز ٹیکس کے نفاذ کو مسترد کر دیاہے اور حکومت سے فوری طور پریہ فیصلہ واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔پی سی ڈی ایم اے کے چیئرمین ہارون نثار نمبردار کی زیرصدارت ایسوسی ایشن میں منعقد ہونے والی ہنگامی اجلاس میں انڈینٹرز کی خدمات پر سیلز ٹیکس کے نفاذکو غیر منصفانہ قرار دیاگیا اور ایسوسی ایشن کی کسٹم کمیٹی کے کنوینرارشد عثمان کی تجاویزپراتفاق کرتے ہوئے فیصلہ کیاگیاکہ سندھ حکومت کے اس فیصلے کو کسی صورت قبول نہیں کیاجائے گا۔اجلاس میں انڈینٹرز نے بھی بڑی تعداد میں شرکت کی اور حکومتی اقدام پر گہری تشویش کا اظہار کیا۔

پی سی ڈی ایم اے کے چیئرمین ہارون نثار نمبردار نے اجلاس سے خطاب میں کہاکہ کمرشل امپوٹرز برآمدی صنعتوں کی پیداواری سرگرمیوں کو جاری رکھنے کے لیے انہیں طلب کے مطابق خام مال فراہم کرکے ملکی برآمدات کو فروغ دینے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں جس میں انڈینٹرز کا کرداربھی اہم ہے کیونکہ برآمدی صنعتوں کی ضرورت کو پورا کرنے کے لیے کمرشل امپورٹرز کی بڑی تعداد بیرون ملک سے خام مال و دیگر آئٹمزکی درآمد کے لیے انڈینٹرز کے ذریعے غیر ملکی سپلائرز سے سودے طے کرتے ہیں جومناسب داموں درآمدی آئٹمز کے سودے طے کروانے کی خدمات انجام دیتے ہیں

مزید :

کامرس -