مجدد الف ثانی کی فکر باطل تصورات کا خاتمہ کرتی ہے: اقبال مجددی

مجدد الف ثانی کی فکر باطل تصورات کا خاتمہ کرتی ہے: اقبال مجددی

  

لاہور (پ ر)حضرت مجدد الف ثانی شیخ احمد سرہندی کو کمالات رسالت سے فیض ملا جس کی وجہ سے انہوں نے دین اکبری کے خلاف جہاد کیا اور علمائے سو کا خاتمہ کیا ۔ یہ بات شارجہ ، متحدہ عرب امارات سے آئے ہوئے سکالر پروفیسر عبد الودود مجددی نے گزشتہ روز ’’عصری ، علمی اور فکری ومغالطوں کا فکر مجدد کی روشنی میں ‘‘ کے عنوان سے منعقدہ سیمینار میں کہی انہوں نے مزید کہا کہ قیامت تک آنے والے تمام فتنوں کا اشارہ اور اس کا حل مکتوبات امام ربانی میں ملتا ہے۔ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر ہمایوں عباس شمس میں کہا کہ میدان تحقیق میں آنے والوں کیلئے ضروری ہے کہ مکتوبات امام ربانی کا کثرت سے مطالعہ کریں تاکہ تعلق بالر سول میں استحکام حاصل ہو اور محققین صالح لٹریچر ترتیب دینے کے قابل ہو جائیں۔معروف سکالر ڈاکٹر عقیل احمد نے کہا کہ حضرت مجدد الف ثانی نے ملت اسلامیہ کے سرمایہ جو محبت رسول ہے اُس کا ہر طرح سے تحفظ کیااور ہر طرح مشکلات کو برداشت کیا حضرت مجدد کی ہی وہ ذات تھی جنہوں نے واضح کیا کہ نبی کریم ﷺ پر ایمان اور محبت کے بغیر توحید بھی معتبر نہیں ۔ محبت رسول کے جذبہ سے سرشاری ہی نے حضرت مجدد کو اپنے عہد میں طالع آزما حکمرانوں کے سامنے کھڑا ہونے پر آمادہ کیا۔ سیمینار سے اظہار خیال کرتے ہوئے معروف دانشور جمیل اطہر سرہندی نے کہاکہ افکار مجدد کو عام کرنے کیلئے مجدد الف ثانی سوسائٹی کے بانی حضرت غلام سرور نقش بندی نے بڑی محنت کی ۔ سیمینار سے نظریات و تعلیمات مجدد کے معروف شارح اور محقق پروفیسر اقبال مجددی ،امریکہ سے آئی ہوئی معروف سکالر بشری فضل ،ڈاکٹر مسعود احمد مجاہد ،پروفیسر سلطان سکندر ، محمد ناظم بشیر اورعثمان صدیقی نے اظہار خیال کیا۔

کیپشن : پروفیسر عقیل احمد، ڈاکٹر ہمایوں عباس شمس، بشری فضل اور دیگر سیمینار سے خطاب کررہے ہیں

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -