ٹارگٹڈ آپریشن کی آڑ میں سیاسی انتقام کا نشانہ بنا یا گیا ، ایوانوں سے مستعفی ہونے کا فیصلہ حتمی ہے :فاروق ستار

ٹارگٹڈ آپریشن کی آڑ میں سیاسی انتقام کا نشانہ بنا یا گیا ، ایوانوں سے مستعفی ...
ٹارگٹڈ آپریشن کی آڑ میں سیاسی انتقام کا نشانہ بنا یا گیا ، ایوانوں سے مستعفی ہونے کا فیصلہ حتمی ہے :فاروق ستار

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)ایم کیو ایم کے رہنما فاروق ستار نے کہا ہے کہ ٹارگٹڈ آپریشن کی آڑ میں ایم کیو ایم کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنا جا رہا ہے ،40سے زائد کارکنوں کو ماورائے عدالت قتل کر دیا گیا جبکہ سینکڑوں کارکنوں کو گرفتار کر کے کسی عدالت میں پیش نہیں کیا گیا۔قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے ایم کیو ایم کے رہنما فاروق ستار نے کہا ہے کہ سینٹ، قومی اور صوبائی اسمبلی سے مستعفی ہونے کا فیصلہ حتمی ہے ،استعفے آج ہی جمع کرائے جائینگے۔ انہوں نے کہاکہ ایم کیو اکے خلاف سازشیں ہو رہی ہیں،ہماری سماجی ، فلاحی تمام سرگرمیوں پر غیر آئینی پابندی عائد کر دی گئی ۔فاروق ستار نے کہا کہ جتنا آپریشن ہوا سب ایم کیو ایم کیخلاف ہوا ،نام نہاد آپریشن کیخلاف عام شہریوں کی جانب سے سخت ر د عمل ہو گا فاروق ستار نے کہا کہ ہمارے کارکنوں کو ماورائے قتل کیا جا رہا ہے ،سینکڑوں کارکنوں کو گرفتار کیا گیاجنہیں کسی عدالت میں پیش نہیں کیا گیا ، قائد الطاف حسین نے احتجاجاََ تقریر کرتے ہیں تو اس پر بھی پابندی لگا دی ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر داخلہ چودھری نثار ، وزیر اعظم نواز شریف ، وزیر اعلی اور سپیکر ایاز صادق کیساتھ بھی زیادتیوں کا معاملہ اٹھایالیکن کچھ نہ ہوا ۔انہوں نے کہا کہ رینجرز اورپولیس نے ہزاروں کارکنوں کو گرفتار اور تشدد کا نشانہ بنایا ،بار بار کہا ہم پر جو الزام ہیں اس کا جائزہ لیں ۔ انہوں نے مزید کہا ہماری صفوں میں کسی کے قاتل پکڑے گئے ہیں تو ہمارے قاتل کہاں ہیں۔فاروق ستار نے کہا کہ ایم کیو ایم کا میدیا ٹرائل بھی کیا جا رہا ہے ،ہمارے زخموں پر مرہم رکھنے کی بجائے نمک چھڑکا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات میں کسی اور کو راستہ دینے کے لئے راستہ ہموار کیا جا رہا ہے ،متوسط طبقے کو کردار ادا کرنے سے روکا جا رہا ہے ۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -