ثقافت کے رنگ، جشنِ آزادی کے سنگ

ثقافت کے رنگ، جشنِ آزادی کے سنگ
ثقافت کے رنگ، جشنِ آزادی کے سنگ

  

اقوام عالم میں وہی غیور قومیں زندہ رہتی ہیں،جو اپنی ملی پہچان، سماجی و ثقافتی اقدار اور سیاسی و معاشی دانش کو پختہ عزم سے اپناتی ہیں۔ آزادی کی نعمت کی قدر کرنا نہ صرف قوم کے ملی جذبے کو ظاہر کرتا ہے،بلکہ یہ دُنیا میں قوم کی غیرت و حمیت کی بھی عکاس ہے۔ پاکستانی قوم جشن آزادی کو ہمیشہ سے ہی منفرد انداز میں مناتے رہے ہیں، اس موقع پر ملی جوش و خروش اور خوشی 14اگست کو عید جیسا سما پیدا کر دیتی ہے۔ جشن میں عوام کے ساتھ ساتھ حکومت بھی ملکی سطح بھرپور انداز میں شریک ہوتی ہے۔ صوبائی و وفاقی حکومتیں سرکاری تقریبات کا انعقاد کرتی ہیں، جن میں ملکی ترقی و خوشحالی کے لئے تمام تر وسائل کو بروئے کار لانے کے لئے تجدید عہد کا اہتمام بھی کیا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ پاکستان میں جشن آزادی کا ایک منفرد رنگ اس کی ثقافت اور وفاقیت کو اجاگر کرنے کے سرکاری اور نجی ثقافتی پروگراموں کا انعقاد بھی ہے۔ اس بار 70ویں یوم آزادی کے موقع پر حکومت نے سرکاری تقریبات کے علاوہ ثقافتی اور وفاقی رنگ کی دلکش ترجمانی کے لئے آزادی ٹرین چلانے کا اہتمام کیا ہے۔ آزادی ٹرین ملک کے چاروں صوبوں کا ایک ماہ میں سفر طے کرے گی اور ثقافت کے رنگوں کے ساتھ جشن آزادی میں تمام پاکستانیوں کو شرکت کا موقع دے گی۔ ٹرین کے سفر کا آغاز گزشتہ دِنوں اسلام آباد سے ہوا جو پشاور اور مُلک کے دوسرے شہروں سے ہوتے ہوئے 4000کلو میٹر کا سفر طے کرے گی اور کراچی میں اپنے سفر کا اختتام کرے گی۔ ٹرین کی ہر بوگی کو صوبوں کے منفرد ثقافتی انداز میں سجایا گیا ہے، جو ملی یکجہتی اور ہم آہنگی کو خوبصورت طریقے سے پیش کرتی ہیں۔

پاکستان کی قومی ثقافت میں ہر صوبے کا اپنا رنگ ہے جو ملی تصویر کو اور بھی خوشنما بنا دیتا ہے۔ آزادی ٹرین مختلف سٹیشنوں پر عوام کے لئے ثقافتی پروگرام پیش کرے گی تاکہ عوام آزادی کے جشن کو بھرپور انداز میں منا سکیں۔ ریڈیو پاکستان نے اس سلسلے میں دو ملی نغموں کو خصوصی طور پر بنایا ہے جو آزادی کے جشن کےُ سر عوام تک پہنچائیں گے۔ پاکستان نیشنل کونسل آف آرٹس اور لوک ورثہ کے آرٹسٹ ان پروگراموں کے ذریعے عوام کی خوشی کو دوبالا کریں گے۔ہماری ثقافت اور تہذیب و تمدن میں حصول حق کے لئے کوشش اور قربانی کا عنصر بھی نہایت اہمیت کا حامل ہے۔ پاکستان کو درپیش تمام سیکیورٹی چیلنجوں کا مقابلہ ہماری بہادر افواج اور سیکیورٹی ادارے بخوبی کر رہے ہیں۔ دو سال سے جاری آپریشن ضربِ عضب قوم کے پختہ عزم کو ظاہر کرتا ہے اور فوج کے بہادر جوانوں کی قربانیاں اس بات کی عکاس ہیں کہ یہ زندہ قوم ہے جو اپنے اقدار و تمدن کی حفاظت کرنا بخوبی جانتی ہے۔ آزادی ٹرین پاکستان کی عکاسی کرتے ہوئے اس پہلو کو بھی خوبصورتی سے اپنے اندر سمیٹے ہوئے ہے۔ آزادی ٹرین کی دو بوگیوں کو آئی ایس پی آر آپریشن ضربِ عضب اور فوجی جوانوں کی شہادت، قربانیوں اور حاصل کردہ کامیابیوں کو اجاگر کرنے کے لئے سجائے گی۔ قومیں جنگیں ہمیشہ باہمی اتحاد اور فوجی قابلیت کے امتزاج سے جیتی ہیں۔ پاکستان کی فوج اور سیکیورٹی کے اداروں کو دہشت گردی کے ناسور کو ختم کرنے کی اس جنگ میں عوام کی بھرپور حمایت حاصل ہے۔ پاکستانی قوم وطن کے لئے دی گئی ہر قربانی کو اعزاز سمجھتے ہیں اور وطن عزیز کے تحفظ کے لئے جان کا نذرانہ دینے کے لئے بھی ہمہ وقت تیار رہتے ہیں۔ وطنِ عزیز کے تحفظ کے عہد کی تجدید ہمارے جشن آزادی کا ایک لازمی جزو ہے۔

آزادی ٹرین تحریک پاکستان کی جدوجہد کو بھی ٹرین کی سجاوٹ اور اپنے پروگراموں میں اجاگر کرے گی۔ جدوجہد آزادی کی یاد نہ صرف قربانیوں کو خراج تحسین پیش کرتی ہے،بلکہ نئی نسل کو ملک کی قدر اور اس کی حفاظت کے لئے بھی پُرجوش کرتی ہے۔ پاکستان کی تاریخ،جس میں عوام کی بے لوث قربانیاں اور تحریک پاکستان کے قائدین کی قابلِ رشک قیادت شامل ہے، اس کو زندہ قوموں کی صف میں شامل کرتی ہے۔ زندہ قومیں اپنے شہیدوں، چیلنجوں اور اپنی جدوجہد آزادی کے مقاصد کو کبھی فراموش نہیں کرتیں، کیونکہ یہی ان کے قومی تشخص کو بناتی ہیں۔ آزادی ٹرین اسی رنگ کو مُلک کے طول و عرض میں لے کر جائے گی اور عوام کو اپنی تاریخ پر فخر کرنے کا موقع فراہم کرے گی۔ تحریک آزادی کے قائدین کی زندگیاں تمام پاکستانیوں کے لئے مشعل راہ ہیں۔ پاکستان کے باسی بخوبی جانتے ہیں کہ ہمارا تابناک ماضی ہماری تہذیب و تمدن اور سیاسی و اخلاقی اقدار کا ضامن ہے۔ پاکستان کے قیام کے ابتدائی دن بھی اس بات کو ثابت کرتے ہیں کہ تمام مشکلات کے باوجود پاکستانی قوم اپنی عزت و اقدار پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کرتی۔ قوموں کی زندگی میں ترقی بھی اپنے اقدار کی پیروی کرتے ہوئے نئی جہتوں کو اپنانے سے آتی ہے۔ پاکستان نے 70سال کے مختصر عرصے میں بہت کچھ حاصل کیا اور ابھی بہت کچھ کرنے کو باقی ہے۔ شکر ہے اس پاک ذات کا، جس نے پاکستان کو مستحکم کیا اور اس کی سیکیورٹی کو ناقابلِ تسخیر بنانے کے لئے اسے پہلی اسلامی ایٹمی قوت بننے کا اعزاز بخشا۔

ہماری ترقی کا سفر جاری ہے۔ معاشی ترقی سے ہم آہنگ زندگی کے تمام شعبہ جات میں پاکستان نمایاں کامیابی حاصل کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ پاک چین اقتصادی راہداری کا حالیہ میگا منصوبہ نہ صرف مُلک کی، بلکہ علاقائی اور بین الاقوامی تناظر میں بڑا کلیدی کردار ادا کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ اس منصوبے کے نمایاں خدوخال بھی آزادی ٹرین کی سجاوٹ کا حصہ ہوں گے اور آزادی ٹرین کا سفر مُلک کو ترقی کی طرف لے جانے کا اعادہ کرے گا۔ سی پی ای سی کا منصوبہ مُلک کے چاروں صوبوں اور دوسرے علاقوں سے گزرتا ہوا بے شمار سرمایہ کاری کے منصوبوں کو عملی جامہ پہنانے کا موقع فراہم کرے گی۔ معاشی ترقی کے ساتھ ساتھ یہ منصوبہ پاکستان کی خارجہ پالیسی کا بھی اہم ستون ہے، کیونکہ پاکستان کے دیرینہ دوست چین سے دوستی کا مظہر بھی ہے۔ چین اور پاکستان دُنیا میں نہ صرف امن کے خواہاں ہیں،بلکہ اقتصادی ترقی کے ذریعے دنیاکے باسیوں کے لئے تمام سہولتوں کی فراہمی کوبھی اپنا مشن سمجھتے ہیں۔ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف سب سے طویل اور مشکل جنگ لڑ کر اس بات کا ثبوت دیا ہے کہ پاکستان ایک امن پسند قوم ہے۔ اب سی پی ای سی کا منصوبہ چین کے ساتھ ساتھ پاکستان کی پُر امن ترقی کے مقصد کو بھی دنیا کے سامنے واضح کر دے گا۔ آزادی ٹرین اس سب رنگوں کو لئے شہروں کا سفر کرے گی اور عوام میں مُلک کے تابناک ماضی کو موجودہ قربانیوں اور کاوشوں کے رنگ کے ساتھ ترقی اور خوشحالی کی منزل کی طرف دل و جان سے بڑھنے کا عزم دے گی۔

مزید :

کالم -