ریاستی اداروں میں تصادم نہیں توازن کی ضرورت ہے،اویس نورانی

ریاستی اداروں میں تصادم نہیں توازن کی ضرورت ہے،اویس نورانی

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)جمعیت علماء پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل صاحبزادہ شاہ محمد اویس نورانی نے کہا ہے کہ ریاستی اداروں میں تصادم نہیں توازن کی ضرورت ہے۔ سول ملٹری تعلقات کی حدود و قیود پر قومی مکالمہ وقت کی ضرورت ہے۔ طاہرالقادری ملک و قوم سے مخلص ہیں تو کینیڈا کی شہریت ترک کر دیں۔ طاہر القادری ہر بار '' قصاص '' وصول کر کے واپس کینیڈا چلے جاتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے جے یو پی کے عہدیداران و کارکنان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ صاحبزادہ شاہ اویس نورانی نے مزید کہا کہ نئے وزیر اعظم عوامی مسائل پر توجہ دیں۔ بنگلہ دیش ماڈل حکومت کی تائید و حمایت نہیں کریں گے۔

الیکشن کو حکمرانوں کے عوامی احتساب کا ذریعہ بنایا جائے۔ ووٹ کے ذریعے آنے والی تبدیلی سے جمہوریت مضبوط ہو گی۔

۔ عوام میں ووٹ کے درست استعمال کا شعور پیدا کرنے کے لئے علماء اپنا کردار ادا کریں۔ جے یو پی کے سیکریٹری جنرل کا کہنا تھا کہ سیاستدان ٹکراؤ کی سیاست سے گریز کریں۔ ملک اس وقت محاذ آرائی کی سیاست کا متحمل نہیں ہو سکتا۔ پاناما پیپرز میں شامل تمام پاکستانیوں کا احتساب ہونا چایئے۔ ججوں اور جرنیلوں کا احتساب نہ ہونے کی وجہ سے شکوک و شبہات پیدا ہوتے ہیں۔ احتساب کا دائرہ وسیع کیا جائے اور موثر احتساب کے لئے قانون سازی کی جائے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...